تازہ تریندیسی ٹوٹکےصحت

آشو گندھ: کرشماتی اور حیرت انگیز اثرات کی حامل بوٹی

آشو گندھا کی جڑوں میں کسی حد تک ضروری نبا تاتی تیل ملتا ہے۔جبکہ جڑوں میں اینٹی بائیوٹک اور اینٹی بیکٹیریل اجزا پائے جاتے ہیں۔ اس میں پوٹاشیم نائیٹریٹ، گلوکوز، اور کچھ لکلائیڈ بھی پائے جاتے ہیں۔

جلد کے امراض:
پودے کے پتے جلد کے متعدد امراض کا موثر علاج ہیں۔ گرم پتوں کی ٹکور سے پھوڑے پھنسیاں اور ہاتھ پاؤں کی سوجن تحلیل ہو جاتی ہے۔ پتوں کا لیپ کار بنکل اور سوزاک کے زخمیوں کے لیے بہترین علاج ہے۔ پتوں کو کسی چکنائی مثلا گھی میں بھون کر زخمیوں اور بالخصوص بیڈ سورز پر لگانا شفا کا باعث ہوتا ہے۔ اس کے پتوں اور جڑوں کا لیپ بھی زخموں کے ناسور اور سوجن پہ لگانا مفید ہے۔

دکھتی آنکھیں:
اسگندھ کے پتوں کی ٹکور سے دکھتی آنکھیں تسکین پاتی ہیں۔

دیگر استعمال:
اس کے پتے سخت تلخ اور مصفیَ خون ہوتے ہیں اور جو شاندے کی شکل میں بخار کے علاج میں استعمال ہوتے ہیں۔ اس کا پھل پیشاب آور ہوتا ہے۔ پنجاب میں سگندھ کا استعمال کمر درد اور ضعف باہ کے علاج میں کیا جاتا ہے۔ سندھ میں عورتوں کو اسقاط حمل روکنے کے لیے استعمال کراتے ہیں۔

نوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔

پچھلا صفحہ 1 2 3

Leave a Reply

Back to top button