تازہ تریندیسی ٹوٹکےصحت

اخروٹ فالج اور لقوہ کو نہایت موثر علاج

ایک تحقیق کے مطابق مغزیات میں 13 تا 20 فیصد لحمیات، 50 تا 60 فیصد روغنیات، 9 تا 12 فیصدنشاستہ، 3 تا 5 فیصد کیلوریز اور کئی دوسری معدنیات کی مقدار ایک فیصد ہوتی ہیں۔جبکہ ایک سوگرام مغزیات میں چھ سوغذائی حرارے(کیلوریز) پیدا ہوتے ہیں۔

چوٹ کا نشان:
جسم پر چوٹ کے نشان کو مٹانے کے لیے اخروٹ کو پانی میں رگڑ کر تین ہفتے تک لگاتے رہنے سے نشان مٹ جاتا ہے۔ اخروٹ میں موجود سیلینیم اور پروٹین بیکٹیریا سے جِلد کو محفوظ بناتے ہیں۔

جلدی خارش:
اخروٹ کا تیل لگانے سے جلد کی خارش دور ہو جاتی ہے۔جسم میں لینولینک کی کمی جلد کو خشک اور کھردرا بنا دیتی ہے، اس سے نجات کے لیے اخروٹ بہترین حل ہے۔اخروٹ کے استعمال سے جلد ایکزیما جیسی بیماری سے محفوظ رہتی ہے۔

اخروٹ کے تیل کو کیسے استعمال کیا جائے:
اخروٹ میں روغن کی مقدار باقی خشک میوہ جات کی نسبت زیادہ ہوتی ہے یہ کافی گرم ہوتا ہے۔اس کی مالش سے دوران خون تیز ہو جاتا ہے۔جس سے پٹھوں میں موسم سرما میں ہونے والے درد کو فوری فائدہ ہوتا ہے اور فالج میں بھی مفید ہے۔

جہاں تک اخروٹ کے تیل کے استعمال کی بات ہے تو ماہرین ہفتے میں اس سے تین بار مالش کامشورہ دیتے ہیں۔ اخروٹ، زیتون اور ناریل کے تیل کو ملا کر استعمال کرنے سے فوائد اور بھی بڑھ جاتے ہیں۔

سیاہ بال کرنے کا ٹوٹکا:
بالوں کی سیاہی کو قائم رکھنے اور سفید ہوتے ہوئے بالوں کو روکنے کے لئے یہ تدبیر مفید ہے۔

اخروٹ کا سبز چھلکا 15 گرام، پھٹکری 2 گرام، بنولے کا تیل 250 گرام، بنولے کے تیل کو تام چینی کے برتن میں ڈال کر اس میں اخروٹ کے چھلکے ڈال لیں اور اس کو ہلکی آنچ پر اتنا گرم کریں کہ اخروٹ کے چھلکے میں نمی سے اڑ کر مکمل خشک ہو جائے یعنی رنگت سیاہ ہوجائے پھر تیل کو چھان کر استعمال کر سکتے ہیں۔

اخروٹ کا تیل اور زیتون کا تیل باہم ہم وزن ملا کر سر میں لگانا جوائیں ختم کرتا ہے۔

اخروٹ کے چھلکے کا منجن:
تازہ اخروٹ کے چھلے جو سبز ہوتے ہیں کو اتار کر منجن کے طور پر استعمال کریں جس سے دانت صاف اور چمکدار ہو جاتے ہیں اور مسوڑھے مضبوط ہو جاتے ہیں۔ خون آنا بند ہوجاتا ہے۔ ہمارے ہاں لوگ پہاڑی مقامات سے تازہ اخروٹ لا کر بزرگ خواتین کو تحفے میں دیتے ہیں جو وہ دانتوں کو صاف کرنے کے لیے استعمال کرتی ہیں۔ مغز اخروٹ کے منجن میں مزید درج ذیل دوائیں بھی شامل کی جاتی ہیں۔

اخروٹ کے خول 200 گرام، سفید صندل 2 گرام، پھٹکڑی بریاں 5 گرام، خوردنی نمک 5 گرام، لونگ 10 گرام، مشک کافور 2 گرام۔

ان سب اجزاء کو پیس کر خوب باریک کرلیں اور چھان کر بطور منجن استعمال کریں رات کو سونے سے قبل اس منجن کا استعمال کریں۔ یہ منجن دانتوں کے جملہ امراض کے لیے مفید ہے۔

پائیوریا سے بچنے کے لیے اخروٹ کی جڑ کی مسواک بھی مفید ہے۔ اس کے علاوہ اخروٹ کے بیرونی سبز چھلکے کو پانی میں جوش دے کر اس میں تھوڑا سا نمک ملا کر کلی کرنے سے فائدہ ہوتا ہے۔

نوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔

پچھلا صفحہ 1 2 3 4 5 6

Leave a Reply

Back to top button