سپورٹس

افریقہ کے جنگجو کرکٹر

کیا آپ کو بولی وڈ کے مسٹر پرفیکٹ عامر خان کی فلم ‘لگان’ یاد ہے جس میں کچھ کاشتکار سالانہ خراج میں اضافے کے خلاف برطانوی حکمرانوں کے خلاف اٹھ کھڑے ہوتے ہیں اور ایک کرکٹ میچ کے ذریعے اپنا حق جیت لیتے ہیں اور اب اس کی حقیقی شکل (کچھ مختلف انداز سے) افریقہ میں سامنے آئی ہے۔
جی ہاں اپنے شکاری اور جنگجوانہ فطرت کے لیے معروف امریقہ کے مشہور مسائی جنگجو نے اب لگتا ہے کہ اپنے بھالے چھوڑ کر کرکٹ کے بلے اٹھا لیے ہیں اور وہ بھی برٹش آرمی کے خلاف۔
ماﺅنٹ کینیا کے دامن میں مسائی کرکٹ وارئیرز ٹیم نے برٹش آرمی ٹریننگ یونٹ کے ساتھ ایک چیئریٹی میچ میں حصہ لیا۔
یہ قبائلی ٹیم اس کھیل کے ذریعے ایچ آئی وی ایڈز، خواتین کے حقوق اور غیرقانونی شکار کے خالف شعور اجاگر کرنے کی کوشش کررہی ہے۔
اس دلچسپ میچ کا انعقاد بھی ایک جنگلی حیات کے لیے مخصوص علاقے میں ہوا جس کے منتظمین میں آسٹریلین ہائی کمشنر بھی شامل تھے۔
ان کرکٹرز نے دنیا میں موجود محض پانچ سفید گینڈوں میں سے ایک کے ساتھ تصاویر بھی بنوائیں جبکہ اس گروپ نے لیکیپیا میں کرکٹ سفاری بھی شروع کرنا کا فیصلہ کیا ہے جہاں مختلف ٹیمیں قدرتی ریزرو میں تماشائیوں کو اپنے کھیل سے لطف اندوز کریں گی جبکہ وہ جنگلی حیات کو بھی دیکھ سکیں گے۔
مسائی قبیلے میں کرکٹ کو 2009 میں ایک جنوبی افریقی محقق نے متعارف کرایا تھا جو کہ کینیا میں قیام کے دوران اس کھیل سے دوری کو برداشت نہیں کر پارہی تھیں۔

میچ کا انعقاد بھی ایک جنگلی حیات کے لیے مخصوص علاقے میں ہوا جس کے منتظمین میں آسٹریلین ہائی کمشنر بھی شامل تھے۔ فوٹو اے ایف پی
میچ کا انعقاد بھی ایک جنگلی حیات کے لیے مخصوص علاقے میں ہوا جس کے منتظمین میں آسٹریلین ہائی کمشنر بھی شامل تھے۔ فوٹو اے ایف پی
ماﺅنٹ کینیا کے دامن میں مسائی کرکٹ وارئیرز ٹیم نے برٹش آرمی ٹریننگ یونٹ کے ساتھ ایک چیئریٹی میچ میں حصہ لیا۔
فوٹو اے ایف پی
ماﺅنٹ کینیا کے دامن میں مسائی کرکٹ وارئیرز ٹیم نے برٹش آرمی ٹریننگ یونٹ کے ساتھ ایک چیئریٹی میچ میں حصہ لیا۔ فوٹو اے ایف پی
مختلف ٹیمیں قدرتی ریزرو میں تماشائیوں کو اپنے کھیل سے لطف اندوز کر رہی ہیں۔ فوٹو اے ایف پی
مختلف ٹیمیں قدرتی ریزرو میں تماشائیوں کو اپنے کھیل سے لطف اندوز کر رہی ہیں۔ فوٹو اے ایف پی
میچ کا انعقاد بھی ایک جنگلی حیات کے لیے مخصوص علاقے میں ہوا جس کے منتظمین میں آسٹریلین ہائی کمشنر بھی شامل تھے۔ فوٹو اے ایف پی
میچ کا انعقاد بھی ایک جنگلی حیات کے لیے مخصوص علاقے میں ہوا جس کے منتظمین میں آسٹریلین ہائی کمشنر بھی شامل تھے۔ فوٹو اے ایف پی
مختلف ٹیمیں قدرتی ریزرو میں تماشائیوں کو اپنے کھیل سے لطف اندوز کریں گی جبکہ وہ جنگلی حیات بھی موجود ہے۔ فوٹو اے ایف پی
مختلف ٹیمیں قدرتی ریزرو میں تماشائیوں کو اپنے کھیل سے لطف اندوز کریں گی جبکہ وہ جنگلی حیات بھی موجود ہے۔ فوٹو اے ایف پی
میچ کا انعقاد بھی ایک جنگلی حیات کے لیے مخصوص علاقے میں ہوا جس کے منتظمین میں آسٹریلین ہائی کمشنر بھی شامل تھے۔ فوٹو اے ایف پی
میچ کا انعقاد بھی ایک جنگلی حیات کے لیے مخصوص علاقے میں ہوا جس کے منتظمین میں آسٹریلین ہائی کمشنر بھی شامل تھے۔ فوٹو اے ایف پی
مختلف ٹیمیں قدرتی ریزرو میں تماشائیوں کو اپنے کھیل سے لطف اندوز کر رہی ہیں۔ فوٹو اے ایف پی
مختلف ٹیمیں قدرتی ریزرو میں تماشائیوں کو اپنے کھیل سے لطف اندوز کر رہی ہیں۔ فوٹو اے ایف پی
مختلف ٹیمیں قدرتی ریزرو میں تماشائیوں کو اپنے کھیل سے لطف اندوز کریں گی جبکہ وہ جنگلی حیات بھی موجود ہے۔ فوٹو اے ایف پی
مختلف ٹیمیں قدرتی ریزرو میں تماشائیوں کو اپنے کھیل سے لطف اندوز کریں گی جبکہ وہ جنگلی حیات بھی موجود ہے۔ فوٹو اے ایف پی
قبائلی ٹیم اس کھیل کے ذریعے ایچ آئی وی ایڈز، خواتین کے حقوق اور غیرقانونی شکار کے خالف شعور اجاگر کرنے کی کوشش کررہی ہے۔
فوٹو اے ایف پی
قبائلی ٹیم اس کھیل کے ذریعے ایچ آئی وی ایڈز، خواتین کے حقوق اور غیرقانونی شکار کے خالف شعور اجاگر کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ فوٹو اے ایف پی
قبائلی ٹیم اس کھیل کے ذریعے ایچ آئی وی ایڈز، خواتین کے حقوق اور غیرقانونی شکار کے خالف شعور اجاگر کرنے کی کوشش کررہی ہے۔
فوٹو اے ایف پی
قبائلی ٹیم اس کھیل کے ذریعے ایچ آئی وی ایڈز، خواتین کے حقوق اور غیرقانونی شکار کے خالف شعور اجاگر کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ فوٹو اے ایف پی

Leave a Reply

Back to top button