Welcome to HTV Pakistan . Please select the content and listen it   Click to listen highlighted text! Welcome to HTV Pakistan . Please select the content and listen it
بین الاقوامی

امریکی پارلیمنٹ کے دو اپوزیشن اراکین کا افغانستان کا خفیہ دورہ

امریکی پارلیمنٹ میں دو اپوزیشن اراکین نے غیر قانونی طور پر افغانستان کا خفیہ دورہ کیا ہے جس کی وجہ سے امریکی اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ اور پینٹاگون کے متعدد اہم عہدیداران شدید برہم ہو گئے ہیں جب کہ عالمی ذرائع ابلاغ میں دونوں اراکین پارلیمنٹ کی خبروں کو شہ سرخیوں میں جگہ دی گئی ہے۔
امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ اور لاس اینجلیس ٹائمز کے مطابق دونوں اراکین پارلیمنٹ ایک ایسے وقت میں کابل پہنچے جب امریکی فوجی اپنے شہریوں کو کابل سے نکالنے کی کوشش میں مصروف ہیں۔
دلچسپ امر ہے کہ ریپبلکن رکن سیٹھ مولٹن اور پیٹر میجر دونوں سابق فوجی ہیں اور انہوں نے عراق جنگ میں حصہ لیا تھا۔ دونوں اراکین پارلیمنٹ موجودہ صدر جوبائیڈن کی افغان پالیسی کے انتہائی سخت ناقد تصور کیے جاتے ہیں۔
امریکی اخبار کے مطابق سیٹھ مولٹن کے ترجمان ٹم بیبا نے دورہ افغانستان کے حوالے سے بتایا ہے کہ وہ پہلے متحدہ عرب امارات گئے اور پھر فوجی جہاز سے کابل پہنچے تھے۔
ترجمان کے مطابق دونوں ریپبلکن اراکین کابل پہنچنے کے 24 گھنٹوں سے بھی کم وقت میں امریکیوں کے انخلا کے لیے استعمال کیے جانے والے ایک ہوائی جہاز میں واپس بھی چلے گئے تھے۔
سیٹھ مولٹن اور پیٹر میجر نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ انہوں نے کابل میں سروس ممبران اور محکمہ خارجہ کے عہدیداران کے ساتھ بات چیت کی۔
انہوں نے واضح طور پر مؤقف اختیار کیا ہے کہ صدر جو بائیڈن کو امریکیوں اور افغان شہریوں کو افغانستان سے نکالنے کے لیے دی جانے والی 31 اگست کی آخری تاریخ میں توسیع کرنی چاہیے۔

Leave a Reply

Back to top button
Click to listen highlighted text!