تازہ تریندیسی ٹوٹکےصحت

ایلوویرا: قدرت کا انسان کیلئے تحفہ، متعدد بیماریوں کا شافی علاج

ایلوویرا وٹامنز اور منرلز سے بھرپور ہوتا ہے۔ اس میں وٹامن اے، سی، ای، بی 1، بی 2، بی 3 اور بی 12؛ پروٹین، لپڈز، امائینو ایسڈز، فولک ایسڈ اور کیلشیئم، میگنیشیئم، زنک، کرومیئم، سیلینیئم، سوڈیئم، آئرن، پوٹاشیئم، کاپر اور مینگنیز جیسے منرلز شامل ہوتے ہیں، جو ہماری صحت بہتر رکھنے کے لیے مفید سمجھے جاتے ہیں اور ان کی کمی سے مختلف اقسام کی بیماریاں ابھر آتی ہیں۔

کوار گندل کا نام تو آپ نے سنا ہی ہو گا۔ اور شائد اس کے پودے کو بھی دیکھا ہو گا۔ بہت سے لوگ اس پودے کو دیکھ کر اپنے ذہن میں اس کے بارے میں یہ تصور کر لیتے ہیں کہ یہ سادہ سا نظر والا ایک فضول پودا ہے۔ لیکن ایسا بالکل نہیں ہے۔ اس کے بہت زیادہ فوائد اور استعمال ہیں۔

کوار گندل کے پتوں میں ایک جیل پائی جاتی ہے۔ جس کو پتوں میں سے بہت آسانی کے ساتھ نکالا جا سکتا یے۔ یہ جیل تقریبا تمام مشہور خوبصورتی بڑھانے والی مصنوعات مثلاً صابن اور کریمز وغیرہ میں استعمال کی جاتی ہے۔ اس جیل کو چہرے پر مسلسل استعمال کرنے سے نا صرف داغ دھبے ختم ہو جاتے ہیں بلکہ چہرے پر موجود کھلے مساموں کا بھی خاتمہ ہو جاتا ہے۔

اس جیل کو زخموں اور جلی ہوئی جگہ پر لگانے سے زخم جلدی ٹھیک ہو جاتے ہیں۔ باوجود اس کے کہ کوارگندل کے پتے کریلے کی طرح کڑوے ہوتے ہیں۔ موٹاپے اور شوگر کے مریضوں کو یہ پتے شوق سے کھاتے ہوئے دیکھا گیا۔ اس کے پتوں کو پکایا بھی جاتا ہے۔

کوار گندل (ایلو ویرا) کی تاریخ
یہ ایک ایسا پودا ہے کہ جس پر دنیا بھر کاسمیٹکس اندسٹری، فوڈ اور فارماسیوٹیکل انڈسٹریز انحصار کرتی ہیں،اس پودے کو ہزاروں برس سے انسان استعمال کررہے ہیں۔

قدیم یونان، مصر، ہندوستان، میکسیکو، جاپان اور چین وغیرہ میں اس کا طبی استعمال صدیوں سے ہورہا ہے، اور اسے متعدد امراض سے نجات کا نسخہ سمجھا جاتا ہے۔
موجودہ عہد میں یہ افریقہ، ایشیا، یورپ اور امریکا میں اگتا ہے اور ہر سال کروڑوں افراد اسے مختلف مقاصد کے لیے مختلف شکلوں جیسے جیل، جوس اور کیپسول وغیرہ میں استعمال کرتے ہیں۔

کوار گندل (ایلو ویرا) کے کیمیائی اجزا
قدرت کے اس عجوبے پودے میں آخر ایسا کیا خاص ہے؟ تو اس کا جواب اس میں موجود اینٹی آکسائیڈنٹس اور جراثیم کش خصوصیات میں چھپا ہے، اس پودے کے پتے 3 تہوں پر مشتمل ہوتے ہیں اور ہر تہہ کا اپنا فنکشن اور استعمال ہے۔

ایلوویرا وٹامنز اور منرلز سے بھرپور ہوتا ہے۔ اس میں وٹامن اے، سی، ای، بی 1، بی 2، بی 3 اور بی 12؛ پروٹین، لپڈز، امائینو ایسڈز، فولک ایسڈ اور کیلشیئم، میگنیشیئم، زنک، کرومیئم، سیلینیئم، سوڈیئم، آئرن، پوٹاشیئم، کاپر اور مینگنیز جیسے منرلز شامل ہوتے ہیں، جو ہماری صحت بہتر رکھنے کے لیے مفید سمجھے جاتے ہیں اور ان کی کمی سے مختلف اقسام کی بیماریاں ابھر آتی ہیں۔

1 2 3 4 5 6اگلا صفحہ

Leave a Reply

Back to top button