تازہ ترینخبریںپاکستان سے

ایٹمی پروگرام کے بانی، ڈاکٹر عبدالقدیر خان سرکاری اعزاز کے ساتھ سپرد خاک

قومی ہیرو کو علیل ہونے پر ہسپتال منتقل کیا گیا لیکن وہ اتوار کی صبح 7 بجے خالق حقیقی سے جاملے ، عمر 85 سال ، فیصل مسجدمیں نمازجنازہ ،لوگوں کی بڑی تعدادمیں شرکت، جسدِ خاکی قومی پرچم میں لپیٹا گیا، فوجی دستے کی سلامی،ایک روزکا سوگ،پرچم سرنگوں ، موسلا دھار بارش کے باوجود گاڑیوں کی طویل قطاریں ، تدفین کیلئے ایچ ایٹ قبرستان لے جایا گیا تو راستے میں کھڑے شہریوں نے ایمبولینس پر پھول نچھاور کئے ، ہر آنکھ اشکبار ، پسماندگان میں بیوہ اور 2بیٹیاں، کئی شہروں میں غائبانہ نماز جنازہ ادا کی گئی

محسن پاکستان،قومی ایٹمی پروگرام کے بانی سائنسدان ڈاکٹر عبدالقدیر خان ا نتقال کرگئے ، انہیں سرکاری اعزاز کے ساتھ اسلام آ باد کے ایچ ایٹ قبر ستان میں ان کے اہل خانہ کی خواہش پر سپرد خاک کر دیا گیا،

حکومت نے اتوار کو ایک روزہ سوگ منایا ، قومی پرچم سرنگوں رہا ۔ ڈاکٹر عبدالقدیر کی عمر 85سال تھی، علیل ہونے پر ہسپتال منتقل کیا گیا تاہم وہ جانبر نہ ہوسکے اور صبح 7 بجے انتقال کرگئے ،

ان کی نماز جنازہ فیصل مسجد کے احاطے میں ادا کی گئی، نماز جنازہ پروفیسر ڈاکٹر محمد الغزالی نے پڑھائی، نماز جنازہ میں سپیکر قومی اسمبلی ، چیئرمین سینیٹ، وزرا، ارکان پارلیمنٹ ، عسکری حکام اور شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی ، اس موقع پر سکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کئے گئے ۔ڈاکٹر عبدالقدیر خان کے جسدِ خاکی کو قومی پرچم میں لپیٹا گیا اور نماز جنازہ سے قبل انہیں پاک فوج کے دستے کی جانب سے سلامی پیش کی گئی۔

جنازے کے وقت اسلام آباد میں تیز بارش کا سلسلہ جاری رہا جس کے باعث عوام کو جنازہ گاہ پہنچنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، اس کے باوجود عوام کی بڑی تعداد اپنے قومی ہیرو کو الوداع کہنے کے لیے فیصل مسجد پہنچی۔ا س موقع پرشہر اقتدار کی فضا سوگوارتھی اور ہرآنکھ اشکبار تھی، مرحوم نے پسماندگان میں بیوہ اور 2بیٹیاں چھوڑی ہیں ۔محسن پاکستان کو خراج عقیدت پیش کرنے اور نماز جنازہ میں شرکت کیلئے جڑواں شہروں سے شہری صبح گیارہ بجے سے ہی فیصل مسجد پہنچنا شرو ع ہوگئے تھے ۔

نما زظہرتک ہزاروں شہری فیصل مسجد پہنچ چکے تھے ۔سہ پہر اڑھائی بجے سے موسم ابرآلود ہونے اور بعدا زاں موسلا دھار بارش اور ژالہ باری کے باعث شہریوں کو فیصل مسجد پہنچنے میں شدید مشکلات کاسامنا کرنا پڑا ۔تیز بارش کی وجہ سے ڈاکٹر عبدالقدیر کی تدفین کچھ تاخیر کے بعد کی گئی۔زیرو پوائنٹ سے فیصل چوک تک گاڑیوں کی طویل قطاروں کے باعث ٹریفک کا نظام درہم برہم ہوکر رہ گیا ،شہری سڑک کے اطراف میں گاڑیاں کھڑی کرکے پیدل چلتے رہے جبکہ فیصل چوک سے فیصل مسجد تک تاحد نگاہ سر ہی سر دکھائی دے رہے تھے ۔

نماز جنازہ مقررہ وقت پر اداکی گئی جس کے باعث ہزاروں شہری نما ز جنازہ میں شریک نہ ہوسکے جبکہ نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد شہریوں نے مختلف ٹولیوں میں سڑکوں پر ہی غائبانہ نماز جنازہ اد اکی ۔

نما زجنازہ کے بعد جب محسن پاکستان کی میت کو ایمبولینس پر تدفین کیلئے ایچ ایٹ قبرستان لے جایا گیا تو راستے میں کھڑے شہریوں نے انکی ایمبولینس پر پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں ۔متعدد شہروں میں غائبانہ نماز جنازہ بھی ادا کی گئی۔

ایم کیو ایم پاکستان کے زیر اہتمام محسن پاکستان ڈاکٹر عبدالقدیر خان کی غائبانہ نماز جنازہ آج بروز پیرخالق دیناہال ایم اے جناح روڈکراچی میں ادا کی جائیگی۔

افغانستان کے دارالحکومت کابل میں پاکستانی سفارتخانہ کے احاطہ میں محسن پاکستان ایٹمی سائنسدان ڈاکٹر عبدالقدیر خان کی غائبانہ نماز جنازہ ادا کی گئی۔ افغانستان میں پاکستانی سفیر منصور احمد خان نے ٹویٹر پر غائبانہ نماز جنازہ کی ادائیگی کے حوالے سے تصاویر بھی شیئر کیں۔

ایم کیو ایم پاکستان نے 3روزہ سوگ کا اعلان کرتے ہوئے اپنی تمام تنظیمی مصروفیات منسوخ کرنے کا اعلان کر دیا۔ایم کیو ایم پاکستان کے کنوینر ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی نے حیدر آبادمیں ڈاکٹر عبدالقدیر خان کی غائبانہ نماز جنازہ ادا کرنے کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ایم کیو ایم پاکستان کے تمام دفاتر میں آج پیر کو غائبانہ نماز جنازہ ادا کی جائے گی۔

مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزبِ اختلاف شہباز شریف نے اعلان کرتے ہوئے کہا کہ محسن پاکستان کو ملک وقوم کے لئے خدمات پر خراج عقیدت پیش کیا جائے گا۔مسلم لیگ (ن) ملک بھر میں محسن پاکستان کے ایصال ثواب کے لئے خصوصی دعائیہ تقاریب منعقد کرے گی۔ ملک بھر سے پارٹی رہنماؤں اور کارکنان کو خصوصی محافل کے انعقاد کی ہدایت جاری کر دی گئی ہے ، فاتحہ خوانی کی خصوصی محافل میں پارٹی رہنما اور کارکنان شریک ہوں گے ۔

حکومت آزادکشمیر نے ا یٹمی سائنسدان ڈاکٹر عبدالقدیر خان کی وفات پر ایک روزہ سوگ کا اعلان کر دیا۔پاکستان بار کونسل نے اعلان کیا ہے کہ ملک بھر میں وکلا آج پیر کو یوم سوگ منائیں گے اور اپنے متعلقہ بار رومز میں چائے کے وقفے کے دوران مرحوم کی روح کے لیے فاتحہ خوانی کریں گے ۔

جے یو آئی (س) کے صوبائی ترجمان حافظ درمحمدو دیگر نے محسن پاکستان اور مایہ ناز سائنس دان ڈاکٹرعبدالقدیر خان کی وفات پر صوبہ بھر میں 3روزہ سوگ کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ صوبائی سیکرٹریٹ ا ور ضلعی دفاتر میں پارٹی کا پرچم سرنگوں رہے گا ۔انہوں نے کہا کہ آج صوبائی سیکرٹریٹ سمیت تمام ضلعی دفاتر میں قرآن خوانی ہوگی اور مرحوم کے درجات کی بلندی کیلئے دعا کی جائے گی۔

Leave a Reply

Back to top button