خبریں

برطانوی انتخابات: 70 مسلمان میدان میں، پاکستانی نژاد امیدواروں کی جیت کا امکان

ویب ڈیسک: برطانیہ میں 2019 کے عام انتخابات کا نعقاد آج (12 دسمبر) کو ہونے جا رہا ہے. اس الیکشن میں مجموعی طور پر 3 ہزار 322 امیدوار حصہ لے رہے ہیں.
میڈیا رپورٹس کے مطابق اس الیکشن میں برطانیہ کے تقریباً 4 کروڑ 60 لاکھ افراد ووٹ کے ذریعے دارالعوام یعنی ہاؤس آف کامنز کے ممبر کا انتخاب کریں گے جس کے نتائج سے بریگزٹ کے مستقبل کا فیصلہ ہوگا۔
ان انتخابات میں پہلی بار کل 70 مسلمان امیدوار حصہ لے رہیں جب کہ گذشتہ انتخابات میں یہ تعداد 47 تھی۔ ان امیدواروں کی اکثریت کا تعلق پاکستان، بنگلا دیش اور کُرد نسل سے ہے جب کہ امید کی جا رہی ہے کہ 24 امیدوار ایسے ہیں جو پارلیمنٹ میں پہنچنے میں کامیاب ہو جائیں گے جو کہ اب تک کی سب سے بڑی تعداد ہوگی۔
نجی ٹی وی چینل ’’جیونیوز‘‘ کی رپورٹ کے مطابق ان میں سے جن 24 امیدواروں کی جیت کے امکانات زیادہ ہیں ان میں سے 70 فیصد پاکستانی نژاد ہیں۔
انتخابات کے سلسلے میں کیے گئے ایک حالیہ سروے کے مطابق مجموعی برطانوی وزیراعظم بورس جانسن کی کنزرویٹو پارٹی کو لیبرپارٹی پر برتری حاصل ہے تاہم لبرل ڈیموکریٹس بھی اچھی پوزیشن میں نظر آتی ہے۔
واضح رہے کہ برطانیہ میں عام انتخابات عموماً 5 سال بعد ہوتے ہیں لیکن آج ہونے والے انتخابات گذشتہ 5 سال کے دوران ہونے والے تیسرے الیکشن ہیں۔ 2017 کے الیکشن کے بعد یہ انتخابات 2022 میں ہونا تھے لیکن 30 اکتوبر 2019 کو برطانوی پارلیمنٹ نے اکثریتی ووٹوں سے نئے انتخابات کی منظوری دی تھی۔

Leave a Reply

Back to top button