تازہ تریندیسی ٹوٹکےصحت

برہمی بوٹی جسمانی اور اعصابی ِکچھاؤ اورقوّتِ حافظہ بڑھانے کیلئے نہایت مفید

براہمی بوٹی میں پینٹاسیکلک ٹرائپرپائنائڈز ( pentacyclic triterpenoids )شامل ہیں۔اس میں ایشیٹک ایسڈ اور برہمک ایسڈ (میڈیکاسک ایسڈ) شامل ہوتے ہیں۔

برہمی ایک چھوٹی بوٹی ہے۔ جسمانی اور اعصابی ِکچھاؤ اورقوّتِ حافظہ بڑھانے کیلئے نہایت مفید ہے۔یہ بوٹی چھتے دار ہوتی ہے۔جڑ ہی سے باریک باریک شاخیں نکلتی ہیں۔اور ان کے سرے پر ایک پتا لگا ہوتا ہے۔ پتے بڑے اورگول ہوتے ہیں۔ یہ پتے نو انچ تک لمبے ہوسکتے ہیں۔اور بیل نما پھیلے ہوتے ہیں۔پودے میں سے ایک شاخ نکل کر زمین پر پھیل جاتی ہے۔اس طرح یہ جڑیں بناتی ہوئی پھیلتی جاتی ہیں۔پتوں کی جڑ میں ننھا سا پھول اور بہت چھوٹا سابیج پیدا ہوتا ہے۔

برہمی بوٹی کو تازہ استعمال کرناچاہیے۔اس کا ذائقہ گاجر کے پتوں کی طرح کسیلا ہوتاہے۔خشک کرنا ہوتو سایہ میں سوکھی بہتر ہے ورنہ دھوپ میں ایتھر اور الکوحل اڑجاتا ہے۔اس کی دوسری قسم کو منڈوک پرنی کہاجاتا ہے۔اس کا پتا اصل برہمی سے ذرا بڑااور موٹاہوتا ہے۔باقی تمام شکل و صورت ایک سی ہوتی ہے۔اور اس کے اوصاف برہمی کی مانند ہی ہوتے ہیں۔

برہمی بوٹی سے تیل بھی نکالا جاتا ہے۔ یہ ایک خوشبودار تیل ہوتا ہے۔

برہمی بوٹی عموماًندی نالوں،تالابوں اور نمی والی زمینوں میں عموماًتین ہزار فٹ بلند پہاڑوں پر پیدا ہوتی ہے۔جموں و کشمیر،ہری پور جبکہ بھارت میں گنگا جمنا کے کناروں نیز ان کے نہروں کے کناروں پر ہوتی ہے۔

برہمی بوٹی میں پائے جانے والے کیمیائی اجزا:
براہمی بوٹی میں پینٹاسیکلک ٹرائپرپائنائڈز ( pentacyclic triterpenoids )شامل ہیں۔اس میں ایشیٹک ایسڈ اور برہمک ایسڈ (میڈیکاسک ایسڈ) شامل ہوتے ہیں۔

برہمی بوٹی کے فوائد:

جسمانی اور اعصابی ِکچھاؤ:
برہمی بوٹی جسمانی اور اعصابی ِکچھاؤ کیلئے اکسیر ہے۔ جسمانی و اعصابی طور پر کمزور افراد اگراس بوٹی کی چائے بنا کر لیں تو یہ ان کیلئے بہت فائدہ مند ہے۔

یادداشت کی بہتری:
ایسے لوگ جو اپنی یادداشت بالکل کھوچکے ہوں یا جن کی یادداشت ختم ہونے کے قریب ہو وہ خواہ جوان ہوں یا بوڑھے ہیں، اس بوٹی کی چائے استعمال کریں۔

1 2 3اگلا صفحہ

Leave a Reply

Back to top button