Uncategorized

دماغ کو تندرست رکھنے کے آسان اور مؤثر طریقے

ویب ڈیسک: عمر بڑھنے کے ساتھ ہمارا دماغ تنزلی کا شکار ہونے لگتا ہے، ہم چیزیں بھولنے لگتے ہیں اور معمے حل کرنا ماضی جیسا آسان کام نہیں رہتا۔ اگرچہ بڑھاپے کے عمل کو واپسی کا راستہ دکھانا تو ممکن نہیں مگر اپنے ذہن کو ضرور ہم ہر عمر کے مطابق فٹ رکھ سکتے ہیں۔ صحت مند دماغ چونکہ کامیاب زندگی گزارنے کے لئے انتہائی ضروری اور غیر معمولی معاون ثابت ہوتا ہے، اس لئے ہمیں اپنے دماغ کی صحت کا بہت خیال رکھنا چاہئے۔ اکثر افراد اس بات سے لاعلم ہیں کہ دماغ کو کیسے صحت مند رکھا جا سکتا ہے۔ آپ اگر نوجوان ملازمت پیشہ انسان ہیں یا عمر رسیدہ بزرگ، آپ کھلاڑی ہیں یا طالب علم، اگر آپ کو یہ مسئلہ درپیش ہے تو یہ چند سادہ ورزشیں اور غذائیں آپ کے لئے مددگار ثابت ہو سکتی ہیں۔
دماغی گیمز کھیلنا
جی ہاں! اگر آپ روزانہ اخبارات میں کراس ورڈز یا دیگر معموں کو حل کرنے کے شوقین ہیں تو یہ عادت آپ کے دماغ کیلئے فائدہ مند ہے۔ بنیادی ریاضی اور اسپیلنگ اسکلز کی مشق جیسے دماغی کھیلوں کا مطلب یہ ہے آپ اپنے دماغ کو زیادہ چیلنج دے رہے ہیں جو اسے تیز رکھنے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔
ورزش
جسمانی ورزشیں درحقیقت دماغ کیلئے بھی فائدہ مند ثابت ہوتی ہیں، روزانہ 30 منٹ سے ایک گھنٹے تک ورزش جیسے یوگا، چہل قدمی، سائیکلنگ، تیراکی اور دیگر وغیرہ بہت آسان بھی ہیں اور تفریح سے بھرپور بھی۔ ان سے دماغ کو موسم سے مطابقت پیدا کرنے میں مدد بھی ملتی ہے۔
سماجی طور پر متحرک رہنا
دن بھر میں کچھ منٹ اپنے دوستوں سے کسی بھی موضوع پر بات کرنے کیلئے وقت نکالیں، اپنے دوستوں اور رشتے داروں سے گھلنا ملنا دماغ کو چوکنا رکھنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔
روزانہ کچھ نیا سیکھنے کی کوشش کریں
یہ کچھ بھی ہو سکتا ہے جیسے کھانے پکانے کی کوئی نئی ترکیب پڑھ کر اسے سیکھنے کی کوشش کرنا یا کسی نئے لفظ کا مطلب سمجھنا یا اپنے دفتر جانے کیلئے نیا راستہ اختیار کرنا۔ اپنی معمول کی روٹین سے باہر نکل کر کچھ نیا کرنا آپ کے دماغ میں ایک نیا جوش پیدا کرنے کا سبب بنتا ہے۔
نئی زبان سیکھنا
تحقیقی رپورٹس میں یہ بات ثابت ہو چکی ہے کہ ایک سے زائد زبانوں سے واقفیت بڑھاپے میں صحت مند دماغ کا سبب بنتی ہے، اور اس کے ساتھ ساتھ دماغ کو مشکل حالات سے نمٹنے میں مدد بھی ملتی ہے۔
ڈاکٹر سے بات چیت
اگر آپ کی عمر 55 سال سے اوپر ہے تو اپنی دماغی صحت کے حوالے سے ڈاکٹرز سے چیک اپ کرواتے رہیں، کیونکہ اکثر ذہنی امراض کا آغاز 55 سال کی عمر کے بعد ہی ہوتا ہے۔
پڑھنا
کتابوں سے لے کر بلاگز یا تازہ ترین خبریں پڑھنے کے ساتھ ساتھ دیگر موضوعات کا مطالعہ آپ کے دماغ کو نئے الفاظ سیکھنے اور یاداشت بہتر بنانے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔
زیادہ پانی پینا
روزانہ کم از کم چھ سے 8 گلاس پانی کا استعمال صحت مند دماغ کے لئے بہت ضروری ہے۔
صحت بخش خوراک
ورزش اور دیگر صحت مند سرگرمیوں کے علاوہ دماغ کو تندرست رکھنے کے لئے غذا کا بھی خاص خیال رکھا جانا چاہیے کیونکہ جب غذا مناسب نہ ہو تو کسی قسم کی کوئی بھی ورزش یا دوسری سرگرمی شائد ہی مفید ثابت ہوتی ہے۔ خوراک میں صحت بخش اجزاء کا استعمال ہی صحت مند دماغ کی ضمانت ہوتا ہے۔ مضر صحت اجزاء جیسے کیفین، تمباکو نوشی اور الکحل کا استعمال تو ترک کرنا ہی چاہئے، زیادہ نمک کھانے سے بھی بچنا چاہئے کیونکہ یہ ہائی بلڈ پریشر اور فالج جیسے امراض کا سبب بن سکتا ہے۔

Leave a Reply

Back to top button