HTV Pakistan
بنیادی صفحہ » اقتباسات » روح کا فرنیچر

روح کا فرنیچر

پڑھنے کا وقت: 1 منٹ

’’ طویل تجربہ ومشاہدہ کے بعد یہ حقیقت مجھ پر کھل چکی ہے کہ کچھ مخفی اثرات ہماری زندگی کو متاثر کر رہے ہیں جن سے ہم کسی صورت بچ نہیں سکتے۔ ان میں سے بعض اثرات اچھے ہیں، جن کا منبع اللہ اور ملائکہ ہیں، اور بعض بُرے، جن کا مبدا ابلیس ہے۔ خدا و ابلیس زبردست حقیقت ہیں۔ جن کی خارج کردہ لہریں ہمارے دل ودماغ سے مسلسل ٹکرا کر خیالات، افکار اور تجاویز کی صورت میں ڈھل رہی ہیں۔ محبت، رحم، حیاء، مروّت، انصاف اور تسلیم و رضا کے حسین جذبات خدائی لہروں سے پیدا ہوتے ہیں۔ نفرت، کینہ، حسد، ظلم، بے حیائی، بد دیانتی اور شرانگیزی کی تمنا شیطانی امواج کی تخلیق ہے۔ اوّل الذکر کا نتیجہ ایک بلند تر حیات اور اللہ سے رابطہ ہے۔ یہ جذبات روح کا فرنیچر ہیں اور روح کی طرح غیر فانی۔ بعد از مرگ روح ان جذبات کے ساتھ اثیر میں جا پہنچے گی۔ وہاں اچھے جذبات لالہ وسمن کی صورت اختیار کر لیں گے اور برے ناروگِلخَن کی۔

یہ بھی پڑھیں! روحانیت کا مقصد

من کی وسیع دُنیا میں خدا و ابلیس دونوں آباد ہیں۔ آؤ! ہم خدا کو اپنا لیں تا کہ خیر کو شر پر، سکون کو اضطراب پر، یزداں کو اہرمن پر، حیات کو موت پر فتح حاصل ہو۔

ڈاکٹر غلام جیلانی برق کی کتاب ’’من کی دُنیا‘‘ سے اقتباس

جواب دیجئے