تازہ تریندیسی ٹوٹکےصحت

روغن انجلیکا مردوں کی طاقت اور توانائی کا خزانہ

انجلیکامیں اینٹی سیپٹک، اینٹی فنگس اور اینٹی بیکٹریل خصوصیات پائی جاتی ہیں۔ جبکہ اس کی جڑوں اور پھولوں سے حاصل کیے گئے تیل میں نیلانڈرین، پائی نین، لیمونین، لینا لول اور بورینول پائے جاتے ہیں۔ یہ کومارنز کے علاوہ اوستھول، اینجلی سین، برگاآپٹن سے بھی مالا مال ہوتا ہے۔ اس میں نباتاتی تیزاب بھی پائے جاتے ہیں۔

انجلیکا ایک پودے کا نام ہے جسے سنبل ختائی بھی کہا جاتا ہے۔ یہ پودا قد آور اور لمبی ٹہنیاں روئیں دار ہوتی ہیں۔ جس کے پتے فرنی اور سفید پھولوں کے چھتر ہوتے ہیں۔ اس کی خوشبو بہت تیز ہوتی ہے۔

انجلیکا کا آبائی وطن افریقہ ہے۔ کچھ محققین کے مطابق اس کا اصل وطن یورپ اور سائبیریا ہے، اب اس کی زیادہ تر کاشت بیلجیم، ہنگری اور جنرمی میں ہوتی ہے۔ انجلیکا کی تقریباً تیس سے زیادہ قسمیں ہیں جو طبی مقاصد میں استعمال کی جاتی ہیں۔

یہ اپنی خوشبو اور طبی خواص کی وجہ سے زمانہ قدیم سے ہی انسانی استعمال میں چلا آ رہا ہے۔

انجلیکا میں پائے جانے والے کیمیائی اجزا:
انجلیکامیں اینٹی سیپٹک، اینٹی فنگس اور اینٹی بیکٹریل خصوصیات پائی جاتی ہیں۔ جبکہ اس کی جڑوں اور پھولوں سے حاصل کیے گئے تیل میں نیلانڈرین، پائی نین، لیمونین، لینا لول اور بورینول پائے جاتے ہیں۔ یہ کومارنز کے علاوہ اوستھول، اینجلی سین، برگاآپٹن سے بھی مالا مال ہوتا ہے۔ اس میں نباتاتی تیزاب بھی پائے جاتے ہیں۔

انجلیکا کا تیل:
انجلیکا سے حاصل شدہ تیل بے رنگ یا زردی مائل ہوتا ہے۔ جو وقت گزرنے کیساتھ بھورا رنگ اختیار کر جاتا ہے۔ بیج سے حاصل ہونے والا تیل بے رنگ ہوتا ہے، جس کی بو تازہ مصالحے جیسی ہوتی ہے۔

انجلیکا کے طبی فوائد:

دل کے امراض:
انجلیکا کا دل کے امراض کیلئے استعمال زمانہ قدیم سے ہی چلا آرہا ہے۔ یہ دل کو تقویت دینے کیلئے استعمال ہوتی ہے اور دوران کون کو متحرک کرتی ہے۔

سانس کے امراض:
انجلیکا کو صدیوں سے یورپ میں سانس کی بیماریوں، نزلہ، زکام اور کھانسی کیلئے استعمال کیا جاتا رہا ہے۔ اس کا تیل ان امراض میں اروماتھراپی کے طور پر استعمال ہوتا ہے۔برٹش فارماکوپیا میں انجلیکا کو برونکائٹس کے علاج کیلئے شامل کیا گیا ہے۔ انجلیکا کے ڈنٹھل اسی مقصد کیلئے فرانس اور سپین میں بہت مقبول ہیں۔

نظام ہضم:
انجلیکا نظام ہضم کے امراض میں بھی استعمال ہوتی ہے۔ اسے بد ہضمی اور بھوک نہ لگنے جیسے امراض میں خصوصیت سے موثر دوا کا درجہ حاصل ہے۔ اس کے استعمال سے بھوک زیادہ لگتی ہے اور زیادہ کھایا پیا جاتا ہے۔ جس سے صحت بھی بہتر ہوتی ہے۔

1 2 3اگلا صفحہ

Leave a Reply

Back to top button