بین الاقوامیخواتین

ازبکستان میں لڑکیوں کو حجاب پہننے کی اجازت

ازبکستان کے اسکولوں میں لڑکیوں کو تعلیمی اداروں میں واپس لانے اور حاضری بڑھانے کے لیے حجاب پہننے کی اجازت دے دی گئی.ازبکستان میں آمرانہ نظام سخت سیکولر ہے جس نے سوویت یونین سے آزادی کے 30 سالوں بعد بھی مذہب پر سخت کنٹرول رکھا ہوا ہے۔ رواں سال کے آغاز میں ازبکستان نے قانون میں ترمیم کرتے ہوئے خواتین کوعوامی مقامات پر حجاب پہننے کی اجازت دی تھی لیکن ان میں ریاستی ادارے جیسا کہ اسکولز شامل نہیں تھے۔
جس کے بعد سے تعلیمی اداروں میں حاضری قدرے کم ہو گئی اور لوگوں نے اس زبردستی کے قانون کے خلاف اپنی لڑکیوں کو بھیجنے سے انکار کر دیا۔ازبکستان کے وزیرتعلیم شیرزود شرماتوف نے کہا کہ ‘متعدد والدین کی اپیل’ کے بعد حکام نے ‘قومی اسکارف اور سر کو سفید یا ہلکے رنگ سے ڈھانپنے کی اجازت دینے کا ارادہ کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ اقدام ہر بچے کے سیکولر تعلیم کے حصول کو یقینی بنانے کے لیے ضروری تھا۔ تاہم یہ واضح نہیں کیا گیا ہے کہ کس عمر سے حجاب پہننے کی اجازت دی جائے گی۔

Leave a Reply

Back to top button