سیلف ہیلپ

زندگی بدل دینے والے تین اصول…… طاہر آفاقی

اگر انسان زندگی میں کچھ حاصل کرنا چاہے تو اسے کوئی فوق الفطرت کام نہیں کرنا پڑتے بلکہ عام کام ہی الگ اور منفرد انداز میں کر کے وہ دوسروں سے ممتاز ہو سکتا ہے۔ اگر آپ ایسا کرنا چاہتے ہیں تو یہ تین اصول ذہن میں رکھ کر زندگی گزاریں اور جو چاہیں حاصل کریں۔
کسی چیز کو بے فائدہ نہ سمجھیں
یہ اصول کہتا ہے کہ ہماری زندگی میں موجود ہر چیز انتہائی زیادہ اہمیت کی حامل ہوتی ہے، وقت اور حالات کے مطابق کوئی عام سی چیز بھی ہمیں بڑی سے بڑی کامیابی سے ہمکنار کر سکتی ہے۔ ایک جاسوس قتل کی تحقیق میں ان اشیاء کی مدد سے قاتل تک پہنچ جاتا ہے جو عام لوگوں کے لیے کسی کام کی نہیں ہوتیں۔ ایک آدمی بحری جہاز پر سفر کر رہا تھا طوفان آیا اور جہاز ڈوب گیا، صرف وہ بچا اور ایک جزیرے پر پہنچ گیا جہاں وہ ستائیس سال تک رہا۔ اس نے ٹوٹے ہوئے جہاز کے تختوں سے گھر بنایا اور ہر غیر ضروری چیز کو کسی نہ کسی طرح اپنی ضرورت کے مطابق ڈھال لیا۔ ہم بھی اپنے اردگرد موجود اشیاء سے اپنی زندگی کو بہتر بنا سکتے ہیں۔ محض چند پیسوں سے عظیم کاروبار کی بنیاد رکھ سکتے ہیں۔ تھوڑے علم کو استعمال میں لا کر بڑے بڑے کام لے سکتے ہیں۔
مستقل مزاجی سے کام لیں
مضبوط عزم و ارادہ اور عملِِ مسلسل سے ہم دنیا کے ہر ناممکن کام کو ممکن بنا سکتے ہیں۔ ایک درخت کو کاٹنے والا جب پہلا وار کرتا ہے تو درخت پر کوئی اثر نہیں ہوتا لیکن دو، تین، پانچ یا سات وار سے درخت کا مضبوط وجود لڑکھڑا جاتا ہے۔ یوں مستقل مزاجی سے کیا جانے والا عمل آپ کی طاقت میں اضافہ کرتا رہتا ہے۔ یہی قانون ہماری زندگی کے ہر شعبے پر لاگو ہوتا ہے۔ مستقل مزاجی اور مضبوط عزم کے ساتھ ہم ہر کام سر انجام دے سکتے ہیں۔
ناکامیوں سے سیکھیں
ہم ہمیشہ کامیاب لوگوں سے سیکھنا پسند کرتے اور ان کے تجربات کی روشنی میں آگے بڑھنا چاہتے ہیں۔ یہ بہت اچھا رویہ ہے لیکن اس کے ساتھ ساتھ ہم ناکام لوگوں سے بھی بہت کچھ سیکھ سکتے ہیں۔ انہوں نے جو غلطیاں کی ہیں ان سے خود کو بچا سکتے ہیں۔ حکیم لقمان سے کسی نے ان کی حکمت کا راز دریافت کیا تو انہوں نے جواب دیا جو کام بیوقوف یا ناکام لوگ کرتے تھے میں اس کام سے پرہیز کرتا رہا ہوں …… یہ ہے میری حکمت کا راز۔ ویسے بھی ہر کامیاب انسان پانچ ناکامیوں کے بعد ایک کامیابی حاصل کرتا ہے تو اصل میں یہ ناکامیاں ہی اس کی اصل کامیابی کا زینہ ہوتی ہیں لہذا ناکامیوں سے سیکھنے والا انسان ہی کامیابی کی راہ ہموار کر سکتا ہے۔

Leave a Reply

Back to top button