تازہ تریندیسی ٹوٹکےصحت

سبز الائچی: اینٹی سیپٹیک خوبیوں کی حامل

سبز الائچی ایک اچھی اینٹی سیپٹیک اور اینٹی بیکٹیریل ایجنٹ ہے۔اس میں میگنیشیم، فاسفورس، کیلشیم، اور پوٹاشیم کی بڑی مقدار پائی جاتی ہے۔ ان کے علاوہ سوڈیم، آئرن، اور میگنیشیم کی بھی ایک بڑی مقدار موجود ہوتی ہے۔اس میں زنک اور تانبا بھی ہوتا ہے۔ الائچی وٹامن سی سے مالا مال ہے جبکہ اس میں وٹامن بی 6، تھامین، اور رائبو فلین بھی ہوتا ہے۔

سبزالائچی جسے چھوٹی الائچی بھی کہا جاتا ہے،روزمرہ گھریلو استعمال کی عام چیز ہے، جسے عام طور پر کھانوں، چائے یا منہ میں خوشبو کیلئے استعمال کیا جاتا ہے۔یہ بھارت، سری لنکا اور دنیا کے بیشتر ممالک میں کاشت کی جاتی ہے۔ بھارت میں بھی میسور کی الائچی سب سے اچھی تصور کی جاتی ہے۔ الائچی کے پودے پر پہلے پھول آتے ہیں اور بعد میں اس پر پھل لگتا ہے جو گچھوں کی شکل میں ہوتا ہے۔ اردو اور ہندی میں اسے چھوٹی الائچی یاسبز الائچی اور انگریزی میں کارڈاموم Cardamom کہتے ہیں۔

قدیم زمانے سے ہی یہ انسانوں کے زیر استعمال چلی آ رہی ہے۔قدیم مصر کے لوگ اس کو منہ کی بدبو دور کرنے کے لئے چباتے تھے اور آج بھی یہ منہ کی بدبو دور کرنے کے لئے استعمال کی جاتی ہے۔ سبز الائچی کو طب میں بھی ایک مقام حاصل ہے اور اس کا استعمال مختلف بیماریوں کے لئے ادویات میں کیا جاتا ہے۔ اس کے بیجوں سے حاصل ہونے والا تیل بھی بہت کارآمد ہے۔

سبز الائچی میں پائے جانے والے کیمیائی اجزا:

سبز الائچی ایک اچھی اینٹی سیپٹیک اور اینٹی بیکٹیریل ایجنٹ ہے۔اس میں میگنیشیم، فاسفورس، کیلشیم، اور پوٹاشیم کی بڑی مقدار پائی جاتی ہے۔ ان کے علاوہ سوڈیم، آئرن، اور میگنیشیم کی بھی ایک بڑی مقدار موجود ہوتی ہے۔اس میں زنک اور تانبا بھی ہوتا ہے۔ الائچی وٹامن سی سے مالا مال ہے جبکہ اس میں وٹامن بی 6، تھامین، اور رائبو فلین بھی ہوتا ہے۔

سبز الائچی کے فوائد:

سانس کی بدبو:
اگر آپ کے سانس کی بدبو ختم نہیں ہورہی تو اس کا اکسیر علاج الائچی ہے۔ یہ اینٹی بیکٹریل خصوصیات کی حامل ہوتی ہے اور اس کی تیز خوشبو منہ کی بدبو دور کر دیتی ہے۔ یہ نظام انہضام کو بہتر بناتی ہے اور منہ کی بدبو کی ایک بڑی وجہ نظام انہضام کی خرابی ہوتی ہے۔

معدہ میں تیزابیت:
الائچی معدے میں موجود لعابی جھلی کو مضبوط بناتی ہے، اس لئے یہ تیزابیت کیلئے اکسیر ہے۔ اس کو چبانے سے منہ میں بننے والے لعاب میں بھی اضافہ ہوتا ہے، جو خوراک کو ہضم کرنے میں بنیادی اہمیت کا حامل ہے۔

1 2 3 4اگلا صفحہ

Leave a Reply

Back to top button