الیکشنبار بار جیتنے والے سیاستدانسینئر رہنما و سیاستدان

سرتاج عزیز

سینئر رہنما و سیاستدان
سرتاج عزیز7فروری 1929 میں خیبر پختونخوا کے ضلع مردان میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے اسلامیہ کالج لاہور ، ہیلے کالج آف کامرس اور دیگر تعلیمی اداروں سے تعلیم حاصل کی۔ 1949میں پنجاب یونیورسٹی سے اقتصادیات کے شعبے میں ڈگری حاصل کی۔ ہارورڈ یونیورسٹی امریکہ سے پبلک ایڈمنسٹریشن (اکنامک ڈویلپمنٹ) میں ماسٹر کیا۔
انہوںنے 1950میں حکومتی ملازمت اختیار کی اور مختلف عہدوں پر کام کیا۔ 1967 میں پلاننگ کمیشن میں جوائنٹ سیکرٹری کی حیثیت سے فرائض سرانجام دیئے۔ سرتاج عزیز کو بین الاقوامی ممتاز عہدوں پر بھی فائزرہنے کا موقع ملا۔1971 سے1984 تک اقوام متحدہ،ورلڈ فوڈ کونسل، انٹرنیشنل فنڈ فار ایگریکلچر ڈویلپمنٹ اور دیگر اداروں میں کام کیا۔
سرتاج عزیز نے 1984 میں وطن واپسی پر پاکستانی سیاست میں حصہ لیا اور وزیر مملکت برائے خوراک و زراعت کی حیثیت سے وفاقی کابینہ میں شامل ہوئے۔ وہ1985 اور 1994 میںخیبر پختونخوا سے سینیٹر منتخب ہوئے۔اکتوبر1985 میں وزیراعظم کے خوراک و زراعت کے خصوصی مشیر اور جنوری 1986 میں وفاقی وزیر خوراک ،زراعت و دیہی ترقی کے عہدے پر فائز ہوئے۔ اگست 1990 سے جولائی 1993 تک وفاقی وزیر خزانہ، منصوبہ بندی و معاشی امور کے وزیر بھی رہے۔
جولائی 1993 ہی میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سیکرٹری جنرل منتخب ہوئے۔ 1998 سے 1999 تک وزیراعظم میاں نواز شریف کی کابینہ میں وزیر خارجہ جیسے اہم منصب پر فائز رہے۔ سرتاج عزیز سینٹ کی خارجہ ،کشمیر وشمالی علاقہ جات کے امور کے علاوہ خزانہ ،معاشی امور اور خوراک و زراعت کی قائمہ کمیٹیوں کے چیئرمین بھی رہے۔ 2013کے انتخابات کے بعد نواز حکومت میں نیشنل سیکورٹی ایڈوائزر مقرر ہوئے، جبکہ آجکل ڈپٹی چیئرمین پلاننگ کمیشن کی حیثیت سے امور سرانجام دے رہے ہیں۔
سرتاج عزیز نے تحریک پاکستان میں بھی حصہ لیا۔46-1945 کے الیکشن میںمسلم لیگ کے لیے کام کرنے پر انہیںمجاہد پاکستان کا سرٹیفکیٹ بھی ملا۔ انہوںنے مارچ 1946 میںقائداعظم محمد علی جناح کے ہاتھوں اسلامیہ کالج لاہور میں اپنی کلاس میںاول آنے پر انعام بھی حاصل کیا۔ 1959 اور 1967 میں منصوبہ بندی و ترقی کے شعبہ میں گراں قدر خدمات سرانجام دینے پر حکومت پاکستان کی جانب سے تمغہء پاکستان اور ستارہ خدمت سے بھی نوازے گئے۔
سرتاج عزیز نے پاکستان کی تاریخ اور معاشی موضوعات پر کئی کتابیں لکھی ہیں۔

Leave a Reply

Back to top button