تجزیہسیاسیات

سعد رفیق کے بیان کی مکمل حمایت کرتے ہیں، رانا ثنااللہ

پنجاب کے وزیر قانون رانا ثنا اللہ نے کہا ہے کہ وہ خواجہ سعد رفیق کے بیان کی مکمل حمایت کرتے ہیں کیونکہ ان کا بیان پاک آرمی کے خلاف نہیں بلکہ وہ سب کو ساتھ ملا کر ملک کو آگے بڑھانا چاہتے ہیں۔

پنجاب اسمبلی کے کیفے ٹیریا میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رانا ثنا اللہ نے کہا کہ خواجہ سعد رفیق کے بیان کی مکمل حمایت کرتے ہیں کیونکہ انھوں نے کہا ہے کہ ہم سب کو مل کر ملک کو آگے لے کر جانا ہے اور یہی پالیسی ہمارے قائد نوازشریف کی ہے۔

صوبائی وزیر نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) نے کبھی بھی افواج پاکستان کے خلاف کسی قسم کا کوئی بیان نہیں دیا کیونکہ افواج پاکستان نے ہمیشہ اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرتے ہوئے ملکی سرحدوں کو محفوظ کیا ہے اور افواج پاکستان ہمارا فخرہیں۔

یاد رہے کہ خواجہ سعد رفیق کے بیان کو گزشتہ روز ڈی جی آئی ایس پی آر میجرجنرل آصف غفور نے ایک سوال کے جواب میں غیرذمہ دارانہ قرار دے دیا تھا۔

جسٹس باقر نجفی رپورٹ کے حوالے سے ایک سوال پر رانا ثنا اللہ نے کہا کہ علامہ طاہر القادری کا ماڈل ٹاؤن واقعے کے حوالے سے موقف تھا کہ باقر نجفی رپورٹ کو شائع کیا جائے اور بعد میں انھوں نے اس رپورٹ میں بھی کئی خامیاں نکالی ہیں مگر جب ان کو تصدیق شدہ رپورٹ کی کاپیاں فراہم کر دی گئیں تو انھیں اپنی کوئی خواہش پوری ہوتی نظر نہیں آئی۔

انھوں نے کہا کہ طاہرالقادری نے رپورٹ عام ہونے کے بعد جب خواہش پوری نہ ہوئی تو مختلف حیلے بہانوں سے حکومت پنجاب کے خلاف پراپیگنڈہ شروع کر دیا حالانکہ ان کو ٹرائل کورٹ میں جانے کا پورا حق حاصل ہے۔

طاہر القادری اور مختلف سیاسی جماعتوں کے اتحاد سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ کچھ شکاری علامہ طاہر القادری کا کندھا سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کرنا چاہتے ہیں اور ان لوگوں نے ساڑھے چار سال پہلے بھی دھرنوں کی سیاست کے ذریعے ملک کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا تھا۔

خیال رہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری کے علاوہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کے حوالے سے طاہرالقادری کی مکمل حمایت کا اعلان کردیا ہے۔

آصف زرداری نے وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف اور وزیرقانون رانا ثنااللہ کو اپنے عہدوں سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا تھا۔

صوبائی وزیر قانون نے کہا کہ اب ان سیاسی شکاریوں کا ایجنڈا ہے کہ مسلم لیگ (ن) کہیں سرخرو ہو کر الیکشن میں نہ چلی جائے جس کے لیے یہ مختلف حربے استعمال کر رہے ہیں۔

انھوں نے دعویٰ کیا کہ نوازشریف کو حکومت سے علیحدہ کرنے کے باوجود بھی ان کی مقبولیت میں کوئی فرق نہیں آیا بلکہ عوام نے جس طرح اسلام آباد سے لاہور آتے ان سے اظہار یکجہتی اور والہانہ استقبال کیا اس کی مثال نہیں ملتی۔

رانا ثنا اللہ نے کہا کہ جب سے شہبازشریف کو اگلے انتخابات میں وزیراعظم کے امیدوار کے طور پر نامزد کیا گیا ہے یہ لوگ اب پنجاب حکومت کو عدم استحکام کرنے کے درپے ہیں۔

وزیراعلی پنجاب کے دورہ سعودی عرب اور نوازشریف کے متوقع دورے کے حوالے سے انھوں نے کہا کہ ان کا دورہ کسی دھرنے کی سیاست کو رکوانے سے متعلق نہیں ہے بلکہ اس وقت ان کا دورہ مسلم امہ کی صورت حال کے حوالے سے ہے۔

رانا ثنااللہ نے 2018 کے انتخابات مقررہ وقت پر ہونے کا یقین دلاتے ہوئے کہا کہ شیخ رشید کی قیاس آرائیاں دم توڑ چکی ہیں آج حکومت اپنی آئینی مدت پوری کرنے جا رہی ہے۔

Leave a Reply

Back to top button