تازہ ترینخبریںپاکستان سے

سول ایوی ایشن نے مسافروں کیلئے نیا ہدایت نامہ جاری کردیا

ہدایت نامے کے مطابق یورپ سے آنے والے 100 فیصد جبکہ سعودی عرب، متحدہ عرب امارات اور قطر سے آنے والے کم از کم 50 فیصد مسافروں کے لیے ریپڈ اینٹیجن ٹیسٹنگ (آر اے ٹی) لازم ہوگی۔

پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی (پی سی اے اے) نے ‘بی’ اور ‘سی’ کیٹیگری کے ممالک کے فوری اثرات سے بچنے کے لیے مسافروں کے لیے نئی ہدایات جاری کردیا۔

ڈان اخبارکی رپورٹ کے مطابق پرواز میں سوار ہونے کے لیے 15 سال سے زائد عمر مسافروں کے 48 گھنٹے قبل کروائے گئے پی سی آر ٹیسٹ کی منفی رپورٹ اور تمام ویکسینیشن لازمی قرار دی گئی ہے۔

ہدایت نامے کے مطابق یورپ سے آنے والے 100 فیصد جبکہ سعودی عرب، متحدہ عرب امارات اور قطر سے آنے والے کم از کم 50 فیصد مسافروں کے لیے ریپڈ اینٹیجن ٹیسٹنگ (آر اے ٹی) لازم ہوگی۔

پی سی سی اے کے مطابق آسٹریلیا، بھوٹان، چین، فجی، جاپان، قازقستان، لاؤس، منگولیا، موریطانیہ، مراکش، میانمار، نیپال، نیوزی لینڈ، سعودی عرب، سنگاپور، جنوبی کوریا، سری لنکا، تاجکستان، ٹرینیڈاڈ اور ٹوباگو اور ویتنام ‘اے’ کیٹیگری میں شامل ممالک ہیں۔

جنوبی افریقہ، بوٹسوانا، گھانا، کینیا، کوموروس، موزمبیق، زیمبیا، تنزانیہ، روانڈا، برازیل، پیرو، کولمبیا، چلی، ایسواتینی، زمبابوے، لیسوتھو، ملاوی، سیشلز، صومالیہ، سرینام، یوراگوئے، وینزویلا اور بھارت سی کیٹیگری میں شامل ہیں۔

وہ ممالک جنہیں اے اور سی کیٹیگری میں شامل نہیں کیا گیا ہے وہ کیٹیگری بی میں شامل ہیں۔

پی سی اے اے کے ترجمان نے کہا کہ اومیکرون کے بڑھتے ہوئے کیسز کی وجہ سے یورپ سے آنے والے مسافروں کے لیے آر اے ٹی ٹیسٹ کو لازمی قرار دیا گیا تھا جبکہ متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب میں ایسے کیسز کم رپورٹ ہوئے ہیں۔

Leave a Reply

Back to top button