تازہ تریندیسی ٹوٹکےصحت

سونف زمانہ قدیم سے انسانی صحت کی محافظ

سونف کے بیج میں غذائی ریشہ، چرپی، کاربوہائیڈریٹ، پولیونسٹریٹ، پروٹین، تھامین، ربوفلوین، نیاسین، وٹامن بی، وٹامن سی، کیلشیم، آئرن، میگنیشیم، مینگنیز، فاسفورس، پوٹاشیم، سوڈیم، زنک، اوردیگر اجزابڑی مقدار میں پائے جاتے ہیں۔

سونف کو زمانہ قدیم سے طبی لحاظ سے صحت کے لیے فائدہ مند سمجھا جاتا ہے۔ سونف کے بے پناہ فوائد ہیں اور اسی لیے کہا جاتا ہے کہ ہر گھر میں سونف ضرور رکھنی چاہئے، یہ کئی امراض میں بہت مفید ہے۔

سونف ایک سستی اور آسانی سے دستیاب ہوجانے والی جڑی بوٹی ہے جسے کچن کی زینت کہا جائے تو غلط نہ ہوگا، کھانوں میں اس کا استعمال خاص خوشبو اور اضافی ذائقے کے لیے کیا جاتا ہے۔

اس کا استعمال بہت سی بیماریوں کو دور کرنے کے لیے بھی کیا جاتا ہے۔ اورخصوصاً وزن کم کرنے کے لیے یہ ایک بہترین جڑی بوٹی ہے۔ اسے خام شکل میں کھایا جائے یا چائے کی صورت میں بھی پیا جاتا ہے جبکہ سونف میں موجود آئل کو ادویات میں بھی استعمال کیا جاتا ہے۔

سونف میں پائے جانے والے کیمیائی اجزا:
سونف کے بیج میں غذائی ریشہ، چرپی، کاربوہائیڈریٹ، پولیونسٹریٹ، پروٹین، تھامین، ربوفلوین، نیاسین، وٹامن بی، وٹامن سی، کیلشیم، آئرن، میگنیشیم، مینگنیز، فاسفورس، پوٹاشیم، سوڈیم، زنک، اوردیگر اجزابڑی مقدار میں پائے جاتے ہیں۔

سونف کے فوائد:
سونف میں کچھ ایسے منرلز پائے جاتے ہیں جو انسانی دماغ کو سکون پہنچاتے ہیں جو کہ پُر سکون نیند سونے کا سبب بنتا ہے۔ ایک تحقیق کے مطابق جو افراد اچھی اور پُرسکون نیند سوتے ہیں ان کا وزن نہیں بڑھتااور انسان ہمیشہ صحت مند رہتا ہے۔جرمنی میں لوگ دوائیاں کم خریدتے ہیں، اور سونف کا پانی زیادہاستعمال کرتے ہیں، اس کی وجہ سونف کے متعدد فوائد ہیں۔

پیٹ کا موٹاپا:
پیٹ کی سائیڈ پرچربی ہاتھ میں آنے لگے، پیٹ کچھ بڑامحسوس ہونے لگے، کولہوں پربوجھ پڑھنے لگے یا کندھوں کے پیچھے گوشت چڑھا ہوا ہوتو سمجھ لیں کہ خطرے کی گھنٹی بج گئی۔ موٹاپے کی وجہ سے اکثرخواتین کومعدے کی تزابیت،جلن،گیس اور قبض کا مسئلہ درپیش ہو جاتا ہے۔
سونف کا پانی ان تمام مسائل کو حل کرنے کا بہترین حل ہے۔

طریقہ: دوگلاس پانی میں ایک کھانے کا چمچ سونف ڈال کر اتنا ابالیں کہ پانی ایک گلاس رہ جائے پھردس منٹ کے لئے اس پانی کو ڈھکن سے ڈھانپ لیں اس کے بعد چھان کر آدھا چائے کا شہد شامل کرکے اچھی طرح مکس کر کے نہارمنہ یہ پانی پی لیں۔ یہ عمل مسلسل چار ہفتوں تک کرنے سے پیٹ کی اضافہ چربی اوروزن حیرت انگیز حد تک کم ہو جائے گا۔

1 2 3 4اگلا صفحہ

Leave a Reply

Back to top button