تازہ ترینسپورٹس

سکیورٹی خدشات: نیوزی لینڈ نے پاکستان کیساتھ سیریز منسوخ کردی

پی سی بی کے مطابق نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈ نے آگاہ کیا ہے کہ انہیں سکیورٹی کے حوالے سے الرٹ کیا گیا ہے، اس لئے یکطرفہ طور پر سریز ملتوی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

کرکٹ شائقین کیلئے بری خبر، سکیورٹی خدشات کے باعث پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان سیزیز منسوخ کر دی گئی۔ کیوی کرکٹ بورڈ نے دورہ پاکستان ختم کر دیا۔ یکطرفہ طور پر سیریز منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے مطابق وزیراعظم نے نیوزی لینڈ کی ہم منصب کو بھرپور یقین دہانی کرائی تھی، عمران خان نے یقین دہانی کرائی تھی مہمان ٹیم کو کوئی خطرہ نہیں۔ وزیراعظم نے ذاتی طور پر نیوزی لینڈ کی وزیراعظم کو رابطہ کر کے انہیں بتایا کہ ہماری سیکیورٹی انٹیلی جنس دنیا کی ایک بہترین ایجنسی ہے۔

پی سی بی کے مطابق نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈ نے آگاہ کیا ہے کہ انہیں سکیورٹی کے حوالے سے الرٹ کیا گیا ہے، اس لئے یکطرفہ طور پر سریز ملتوی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ نیوزی لینڈ ٹیم کے آفیشلز نے حکومت پاکستان کی سکیورٹی پر اطمینان کا اظہار کیا تھا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کا کہنا ہے کہ وہ دورہ شیڈول کے مطابق جاری رکھنے کا خواہاں ہے تاہم نیوزی لینڈ کے اس اچانک یکطرفہ فیصلے سے کرکٹ شائقین کو مایوسی ہوئی ہے۔

واضح رہے کہ میچ آج دوپہر ڈھائی بجے شروع ہونا تھا لیکن شائقین کو اسٹیڈیم کے اندر داخل ہونے کی اجازت نہیں دی گئی۔

18 سال بعد نیوزی لینڈ کی ٹیم پاکستان میں سیریز کھیلنے کے لیے آئی تھی اور ٹیم کی آمد سے قبل نیوزی لینڈ کی سکیورٹی ٹیم نے بھی انتظامات پر اطمینان کا اظہار کیا تھا۔ پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان تین ون ڈے میچز راولپنڈی اور 5 ٹی ٹوئنٹی میچز لاہور میں کھیلے جانے تھے۔

دوسری طرف پاکستان اور نیوزی لینڈ کی کرکٹ سیریز سکیورٹی وجوہات کی بناء پر منسوخی کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے معاملہ آئی سی سی میں اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیئر مین رمیز راجہ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر لکھا کہ آج شائقین اور ہمارے کھلاڑیوں کے لیے بہت افسوسناک دن ہے، سیکورٹی کے خدشات کی بنا پر یکطرفہ فیصلہ بہت مایوس کن ہے۔ نیوزی لینڈ کس دنیا میں رہ رہا ہے؟

اپنے ٹویٹر پر قومی ٹیم کے چیئر مین پی سی بی نے کہا کہ سیریز کی منسوخی کے بعد نیوزی لینڈ ہمیں انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) میں سنے گا۔

فاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ ہمارے اداروں نے راضی کرنے کی کوشش کی لیکن نیوزی لینڈ نے اپنا فیصلہ کیا۔ پاکستان اور نیوزی لینڈ کےدرمیان کرکٹ سیریز کو سازش کے تحت ختم کیا گیا ہے۔

پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان کرکٹ سیریز منسوخ ہونے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نے نیوزی لینڈ کی وزیراعظم سے رابطہ کیا، نیوزی لینڈ کے سکیورٹی انچارج نے کہا سکیورٹی خدشات ہیں، نیوزی لینڈ سکیورٹی انچارج سے پوچھا کیا سکیورٹی خدشات ہیں تو بتایا نہیں گیا۔

انہوں نے کہا کہ نیوزی لینڈ کی وزیراعظم نے کہا کہ ہمارے پاس اطلاع ہے ٹیم باہر نکلے گی تو حملہ ہو سکتا ہے۔ ہمارے اداروں نے راضی کرنے کی کوشش کی لیکن نیوزی لینڈ نے اپنا فیصلہ کیا، ہمارے کسی ادارے کو تھریٹ موصول نہیں ہوا۔ ہم نے نیوزی لینڈ ٹیم کو بہترین سکیورٹی دی، یہ دورہو سازش کے تحت ختم کیا گیا ہے۔

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ پاکستان کی خطے میں امن کی کاوشوں کے خلاف دستانے پہنے ہوئے ہاتھوں نے سازش کی، وہ ہمیں قربانی کا بکرا بنانا چاہتے ہیں۔ پاکستان کے دونوں بارڈر محفوظ ہیں۔ بھارت کی سوئی پاکستان پر پھنسی ہوئی ہے۔ پاکستان میں ہر حال میں امن قائم رہے گا۔

صحافی کی طرف سے سوال کیا گیا کہ کیا آپ استعفی دیں گے؟ اس پر جواب دیتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ کوئی عقل کی بات کرو۔ جس کی بھی سازش ہے نام لینا مناسب نہیں۔ یہ وزارت داخلہ کی ناکامی نہیں ہے۔

ایک اور سوال کے جواب میں شیخ رشید کا کہنا تھا کہ انگلینڈ کی ٹیم انہی باتوں پر غور کر رہی ہے، انگلینڈ کی ٹیم کو خوش آمدید کہیں گے۔ انگلینڈ ٹیم 24 گھنٹے میں فیصلہ کرے گی۔ برطانوی ٹیم کے لیے انتظامات مکمل ہیں، فیصلہ انگلینڈ نے کرنا ہے۔

افغانستان کے معاملے پر بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ انسانی ہمدردی کے باعث افغانیوں کی مدد کر رہے ہیں، کوئی سمجھتا ہے کہ افغانستان کی حکومت فوراً سب کو کچھ ٹھیک کر دے گی تو وہ خوابوں میں رہتے ہیں۔ افغان حکومت کو تسلیم کرنے کا فیصلہ عمران خان نے کرنا ہے۔

Leave a Reply

Back to top button