Uncategorized

صرف جرم کرنیوالا مجرم، کوئی کسی کے جرم کی سزا نہیں بھگت سکتا، چاہے والدین ہوں۔لاہور ہائیکورٹ

لاہور ہائیکورٹ میں والد کے انتقال کے بعد بوگس چیک کا مقدمہ بیٹوں پر درج کرنے سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی ، عدالت نے درخواست مسترد کر دی ۔
لاہور ہائیکورٹ میں درخواست گزار نے درخواست دی تھی کہ ملزم نے زرعی مشینری خریدی تھی اور اس کے عوض 11 لاکھ کا چیک دیا تھا جو باؤنس ہو گیا ، ملزم انتقال کر چکا مگر اس کے بیٹے اس کا کاروبار سنبھالتے ہیں لہذا بیٹوں کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے
لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس محمد شان گل نے تحریری فیصلے میں کہا کہ یہ بات طے ہے کہ مجرمانہ ذمہ داری قانونی ورثاپر منتقل نہیں ہوتی، کسی ملزم کا جرم کے بعد انتقال ہو جائے تو ورثا جرم کے ذمہ دار نہیں ہوں گے ۔
عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا کہ والد کے انتقال کے بعد بیٹوں پر جعلی چیک کا مقدمہ درج نہیں کیا جاسکتا، دنیا کے تمام قوانین میں صرف جرم کرنے والا مجرم تصور کیا جاتا ہے، کوئی کسی دوسرے کے جرم کی سزا نہیں بھگت سکتا، چاہے والدین ہوں۔
لاہور ہائیکورٹ نے اپنے فیصلے میں لکھا کہ بینک اکاؤنٹ والد کے نام پر ہے جو کہ انتقال کر چکا ہے، اصل چیک سے معلوم ہوتا ہے کہ چیک پر بیٹوں کے والد نے دستحظ کیا تھا ، بیٹے ملزم والد کا کاروبار سنبھالنے کے باوجود اس کی مجرمانہ سرگرمیوں کے ذمہ دار نہیں، عدالت مقدمہ درج کرنے کی درخواست مسترد کرتی ہے۔

Leave a Reply

Back to top button