فن اور فنکار

فلموں کے خوفناک تخیلاتی کرداروں کے انسانی نفسیات پر اثرات

انٹرنیٹ اور فلموں کے خوفناک تخیلاتی کردار انسانی نفسیات پر اثرانداز ہو کر جرائم کی پُرتشدد اور لرزہ خیز وارداتوں پر اکسانے کا سبب بن رہے ہیں۔
امریکا میں دو اسکول کے بچوں کا اپنے ساتھیوں کو لرزہ خیز انداز میں قتل کرنے کی وجہ بھی یہ بنے۔
جب تخیل اور حقیقت کے درمیان فرق ختم ہوجائے، پھر ایسا ہی ہوتا ہے، 2014 میں امریکی ریاست وسکونسن میں اسکول کے بچوں کے ہاتھوں ہونیوالی حیرت انگیز واردات نے سننے والوں پر لرزہ طاری کردیا۔
جب دو 12 سالہ طالبات Anissa Weier اور Morgan Geyser نے چھپن چھپائی کھیلنے کے دوران اپنی ساتھی طالبہ پر پانچ انچ لمبے تیز دھار آلے سے 19 بار حملے کئے۔
تفتیشی بیان میں انہوں نے پولیس کو بتایا کہ انہوں نے ایسا لیجنڈری کردار سلینڈر مین کو خوش کرنے کے لئے کیا، جس کے بارے میں انہیں ایک ویب سائٹ کے ذریعے پتہ چلا۔
2014 میں لاس ویگاس میں اسی کردار سے متاثر ہوکر تشدد کا ایک اور افسوسناک واقعہ پیش آیا۔ جب ایک شادی شدہ جوڑے Jerad and Amanda Miller نے دو پولیس اہلکاروں سمیت تین افراد کو فائرنگ کرکے قتل کردیا اور پھر خود کو بھی گولی مار لی۔
محلے داروں کا کہنا تھا کہ شوہر اکثر Slender Man اور بیوی Harley Quinn کے بھیس میں پھرا کرتے تھے۔
2012 میں کولاراڈو میں James Holmes نے رات گئے فلم The Dark Night Rises کے شو کے دوران تھیٹر میں گھس کر لوگوں پر فائر کھول دیا۔ اور بارہ افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔
تفتیش کاروں کا کہنا ہے کہ ہومز نے اپنے بال نارنجی رنگے ہوئے تھے اور خود کو نامور کردار "جوکر” تصور کرتے ہوئے بات چیت کررہا تھا۔
2019 میں 27 سالہ آسٹریلوی خاتون Jessica Camilleri نے سو بار چاقو کے وار کرکے سفاکی سے اپنی والدہ کا قتل کیا، پھر سر کاٹ کر اسے گھر کے سامنے فٹ پاتھ پر چھوڑ دیا۔ خاتون کے فیس بک پوسٹس سے انکشاف ہوا کہ وہ فلم Jeepers Creepers سے بے حد متاثر تھیں۔

Leave a Reply

Back to top button