تازہ تریندیسی ٹوٹکےصحت

لہسن: صدیوں سے لا علاج بیماریوں کا قدرتی علاج

لہسن میں وٹامن بی2فیصد، 1 فیصد وٹامن سی، 1 فیصد سلینیم، 2فیصد میگنیشیم کے ساتھ ساتھ فائبر بھی پایا جاتا ہے۔ اس میں کیلوریز صفر ہوتی ہے، لہسن میں کیلشیم، کوپر، پوٹاشیم، فاسفورس سمیت آئرن بھی ایک بڑی مقدرا میں موجود ہوتا ہے۔

ہرے مسالے میں شمار کیا جانے والا لہسن ہر گھر کے کچن میں پایا جاتا ہے، اس کے بے شمار طبی فوائد ہیں۔ امریکی ویب سائٹ ’ہیلتھ لائن‘ کے مطابق ماہر غذائیت جو لیچ کا کہنا ہے کہ دواؤں میں استعمال ہونے والے کیمیائی اجزاء قدرتی طور پر لہسن میں پائے جاتے ہیں، جو لیچ کا کہنا ہے کہ لہسن میں بہترین غذائیت پائی جاتی ہے۔

تقریباً 7000 سال قبل سے دوا کے طور پر استعمال ہونے والے لہسن کے طبی فوائد سے آج کے ماہر غذائیت بھی قائل ہیں، اس میں موجود اینٹی آکسیڈنٹ، اینٹی سیپٹک اور اینٹی بیکٹیریل جز انسانی جسم کو ہر قسم کے موسمی یا فنگل انفیکشن اور الرجی سے بچانے کی صلاحیت رکھتے ہیں، لہسن سے بچوں کے پیٹ میں موجود کیڑوں کا بھی علاج کیا جاتا ہے۔

لہسن میں پائے جانے والے کیمیائی اجزا:
لہسن میں وٹامن بی2فیصد، 1 فیصد وٹامن سی، 1 فیصد سلینیم، 2فیصد میگنیشیم کے ساتھ ساتھ فائبر بھی پایا جاتا ہے۔ اس میں کیلوریز صفر ہوتی ہے، لہسن میں کیلشیم، کوپر، پوٹاشیم، فاسفورس سمیت آئرن بھی ایک بڑی مقدرا میں موجود ہوتا ہے۔

لہسن کی تاریخ:
عرصہ دراز سے ڈاکٹر لہسن کو علاج معالجے کیلئے استعمال کرتے آئے ہیں۔یونانی مورخ ہیرودوتس نے بیان کِیا کہ مصری حکمران بڑی مقدار میں پیاز، مولی اور لہسن خریدا کرتے تھے تاکہ اہرامِمصر کی تعمیر کرنے والے مزدوروں کو خوراک کے طور پر کھلا سکیں۔ان کی خوراک میں بڑی مقدار میں لہسن ہوتا تھا تاکہ مزدوروں میں زیادہ طاقت اور قوتِ برداشت پیداہو۔

کئی صدیاں پہلے یونانی حکیم بقراط اور دیوسکوریدس ہاضمے سے متعلق مسائل، کوڑھ، کینسر، زخموں، انفیکشن اور دل کے امراض کیلئے لہسن تجویز کِیا کرتے تھے۔ فرانسیسی کیمیادان لوئیس پاسچر نے 19 ویں صدی میں لہسن پر اپنی تحقیق سے دریافت کِیا کہ اس میں جراثیم کش اجزا ہیں۔ افریقہ میں 20 ویں صدی کے دوران، ایک مشہور انگریز ڈاکٹر البرٹ شوئٹزر نے پیچش اور دیگر بیماریوں کے علاج کیلئے لہسن کو استعمال کیا۔ جب دوسری عالمی جنگ میں روسی فوجی ڈاکٹروں کو جدید ادویات کی کمی کا سامنا کرنا پڑا تو اُنہوں نے لہسن سے سپاہیوں کے زخموں کا علاج کِیا۔ اسی وجہ سے لہسن روسی پنسلین کے نام سے مشہور ہو گیا۔ حال ہی میں سائنسدانوں نے لہسن کے نظامِ دوران خون کو فائدہ پہنچانے کے بارے میں مزید تحقیق کی ہے۔

لہسن کے طبی فوائد:

دانتوں کے درد سے نجات
دانت کا درد کتنا تکلیف دہ ہوتا ہے، یہ بتانے کی ضرورت نہیں، اگر آپ کے پاس اس تکلیف سے نجات کے لیے فوری طور پر ڈاکٹر کے پاس جانے کا وقت نہیں، تو لہسن سے مدد لے سکتے ہیں، لہسن سن کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے، تو بس آپ کو لہسن کو متاثرہ دانت پر رگڑنے کی ضرورت ہے، جس سے درد میں کافی حد تک کمی آتی ہے، اور ڈاکٹر کے پاس جانے کے لیے وقت مل جاتا ہے۔

بالوں کو اگائیں:
لہسن آپ کے بالوں کے گرنے کے مسئلے کو ختم کرسکتا ہے جس کی وجہ اس میں شامل ایک جز الیسین کی بھرپور مقدار ہے، یہ سلفر کمپاونڈ پیاز میں بھی پایا جاتا ہے اور ایک طبی تحقیق کے مطابق بالوں کے گرنے کی روک تھام کے لیے موثر ہے۔ لہسن کو کاٹ لیں اور اس کی پوتھیوں کو سر پر ملیں۔ آپ تیل میں بھی لہسن کو شامل کرکے مساج کے ذریعے یہ فائدہ حاصل کرسکتے ہیں۔

بلڈ پریشر کم کرنے میں مددگار:
اگر آپ ہائی بلڈ پریشر کے شکار ہیں تو لہسن کو اپنی غذا کا حصہ بنالیں، یہ شریانوں کو کشادہ کرنے کے ساتھ تناؤ کم کرتا ہے، ہائی بلڈ پریشر کے ساتھ سردرد کی شکایت رہنے کے ساتھ ساتھ یہ دل پر بوجھ بڑھاتا ہے جس سے ہارٹ اٹیک اور فالج کا خطرہ بڑھتا ہے۔ ایک تحقیق میں بتایا گیا کہ لہسن کے 4 جوے روزانہ کھانا بلڈ پریشر کی سطح میں کمی لاتا ہے جبکہ لہسن کھانے سے صحت کے لیے نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح میں بھی کمی آتی ہے، جس کے نتیجے میں امراض قلب یا فالج کا خطرہ کم ہوتا ہے۔

1 2 3 4اگلا صفحہ

Leave a Reply

Back to top button