مختصر تحریریں

مفروضے اور حقیقتیں…… ارم صبا

اندھا انسان کون ہے، وہ انسان جو سات رنگوں کی دھنک کو نہیں دیکھ سکتا، اس کے ذہن کے نقوش میں کوئی رنگ نہیں کیونکہ اس نے کسی رنگ کو حسی بصر سے نہیں جانا۔ وہ اپنے ہاتھوں کے لمس سے کسی شے کو چھو کر اس کا سانچہ تخلیق کرتا ہے لیکن اس کے بر عکس ایک ایسا انسان جو سچ اور جھوٹ کو دیکھ کر تمیز نہیں کر سکتا، جو اپنی ذات کے چھپے عیبوں کا ادراک نہیں کر سکتا، جو برائی کو ظاہری آنکھ سے دیکھ کر بھی انکاری ہو جاتا ہے، جو لالچ اور حوس کے چکر میں آ کر سچائی نہیں دیکھ سکتا، جو اقتدار کے نشے میں مدہوش ہو کر، بے حسی کی چادر اوڑھ کر سچائی کو دیکھنے کے باوجود محض اسے خیال یا واہمہ تصور کر لیتا ہے، جو کالا دھن کمانے کے لئے معصوم بچوں کو قتل کرتا ہے اور ہستے بستے گھروں سے اٹھنے والے جنازے دیکھ کر بھی دکھ محسوس نہیں کرتا…… ایسے شخص کو آپ کیا کہیں گے؟ کیا یہاں یہ سوال پیدا نہیں کہ اصل اندھا کون ہے؟
اسی طرح یہ مفروضہ کہ بہرہ انسان وہ ہے جو سن نہیں سکتا لیکن وہ انسان جو صرف خوشامد سن سکتا ہے، حق کی بات سننے کے لئے اس کے کان بند ہو جاتے ہیں، اس کے نزدیک حق کی آواز جانچنے کا معیار صرف امیری ہے…… اب سوچئے کہ حقیقت میں بہرہ انسان کون ہے؟
اسی طرح ایک ایسا انسان جو قوتِ گویائی کے باوجود سچ کو چھپاتا بھی ہے اور اس کی غلط تصویر کشی کر کے اسے بیان بھی کرتا ہے، جو سچائی کے ساتھ جھوٹ بولتا ہے حقیقت میں وہی گونگا ہوتا ہے۔ ہم من حیث القوم حقیقی قوتِ بصر، حقیقی قوتِ گویائی اور حقیقی قوتِ سماء سے محروم ہیں اور یہ محرومی ہمیں پستیِ فکر میں لے جاتی ہے جہاں ہم صرف آپس میں مباحثہ کرتے ہیں۔
مبلغ قوتِ گویائی کے باوجود یقین اور الفاظ کی تاثیر سے محروم ہے، لاکھوں مساجد میں دن رات صبح شام اسلام پھیلانے کے باوجود شائد معاشرہ بے حس اور گندہ اسی لئے ہے۔
حقیقی قوتِ گویائی اور حقیقی قوتِ سماء نہ صرف ملک و قوم کی زندگی بلکہ انسانی بقا کی بھی ضامن ہے کیونکہ زندگی کی یہ حقیقتیں محض مفروضے ہوتیں تو ہم اپنی زندگی میں رزق کے انتخاب میں جواب دہ نہ ہوتے۔ ہم انسانوں سے سلوک میں اور عبادات کے سلسلے میں جوابدہ نہ ہوتے۔ اندھا آدمی بینائی کے حوالے سے جوابدہ نہیں لیکن بینائی کے باوجود اندھا ہو جانا اس کا جواب دینا ہو گا۔ انسان اگر ان بنیادی حقیقتوں کو اپنا لے تو وہ فنا کی بستی میں بقا کا مسافر بن جاتا ہے۔
مصنف کے بارے میں:
محترمہ ارم صبا کیریئر کونسلر ہیں اور این سی بی اے ای میں بطور ڈائریکٹر خدمات انجام دے رہی ہیں.

Leave a Reply

Back to top button