تازہ تریندیسی ٹوٹکےصحت

مورنگا آئل کے کرشماتی فوائد دے ہمیں صحت اور تندرستی

عصری تحقیقات و تجربات نے ثابت کیا ہے کہ سوہانجنا میں پروٹین، کیلشیم، وٹامن A، وٹامن C، پوٹاشیم، میگنیشیم، زنک اور فاسفورس پائی جاتی ہے۔

جدید سائنس ترقی کی منازل طے کر کے آئے روز کچھ نہ کچھ نیا منظر عام پر لانے میں مصروف ہے۔ لیکن اس ترقی میں ایک حیران کُن پہلو یہ ہے کہ بعض معاملات کی سچائی پر ہمیں اب یقین آ رہا ہے جبکہ ہمارے بزرگ اپنے اپنے زمانے میں ان سے فوائد حاصل کر چکے ہیں، جیسا کہ مختف پودوں اور جڑی بوٹیوں کے خواص! سائنسی تحیقیق کے اسی پہلو نے ہمیں کئی ایسے پودوں سے روشناس کرایا ہے جنہیں ”کرشماتی پودے“ قرار دیا گیا ہے۔ ان ہی پودوں میں ایک مورنگا یعنی سوہانجنا بھی ہے۔ سوہانجنا کا قدرتی مسکن شمالی ہندوستان اور جنوبی پاکستان ہے۔

یہ پاکستان میں سندھ اور جنوبی پنجاب کے علاقوں میں پایا جاتا ہے۔ کاشت کے لحاظ سے سوہانجنا نیم پہاڑی علاقوں، ندی نالوں کے بیٹ، ریتیلی اور کنکری زمینوں کا پودا ہے جس کی چھال بھوری، نرم، موٹی اور دراڑوں والی ہوتی ہے، اس کے پتے اور پھول فروری اور مارچ میں آتے ہیں اور پھلیاں اپریل سے جون تک پک جاتی ہیں۔ یہ خود رو بھی ہے اور اس کی کاشت بھی کی جاتی ہے۔

سوہانجنا کی کئی اقسام ہیں، تاہم ”مورنگا اولیفیرا“(Moringa olifera) اس کی وہ قسم ہے جس کی غذائی اہمیت انسانوں اور جانوروں دونوں کے لیے بہت زیادہ ہے۔ یوں تو سوہانجنا کی پھلیوں، پتوں اور جڑوں سمیت اس کے ہر ہر حصے میں انسان کیلئے کئی فوائد مضمر ہیں، لیکن ہم یہاں صرف اس کے تیل کے چند کرشماتی اور صحت بخش پہلوؤں پر بات کریں گے۔

سوہانجنا میں موجود منرلز
عصری تحقیقات و تجربات نے ثابت کیا ہے کہ سوہانجنا میں پروٹین، کیلشیم، وٹامن A، وٹامن C، پوٹاشیم، میگنیشیم، زنک اور فاسفورس پائی جاتی ہے۔

سوہانجناکا تیل
سوہانجنا قدرت کا وہ پیش بہا تحفہ ہے جو تیزی سے بڑھتا ہوا ایک سے تین سال میں بیج دینے شروع کر دیتا ہے۔ اس کے بیج میں تیس سے چالیس فیصد تیل ہوتا ہے اور اسے کولہو میں بآسانی نکالا جا سکتا ہے۔ مورنگا کا تیل دنیا کا مہنگا ترین تیل ہے۔ یہ اعلیٰ قسم کا شفاف تیل بے شمار خصوصیات کا حامل ہوتا ہے۔

قوت مدافعت بڑھائے!
غذائی ماہرین کے مطابق یہ تیل خوردنی طور پر قابلِ استعمال ہونے کے علاوہ غذائی خوبیوں میں زیتون کے تیل کے برابر ہوتا ہے۔ پکانے کے دوران یہ تیل دوسرے تیل کی نسبت زیادہ دیر تک قابل استعمال رہتا ہے اور نہ صرف کھانے کو لذیذ بناتا بلکہ جسم میں قوت مدافعت بھی پیدا کرتا ہے۔ یوں یہ ایک بہترین غذائی ٹانک ہے۔

انٹی بکٹیریل اجزاء
مورنگا آئل یا سوہانجنا کے تیل میں موجود انٹی بیکٹریل اجزاء کئی بیماریوں کے علاج میں انتہائی مدد گار ہیں۔ کینسر، ایڈز اور یرقان وغیرہ جیسی متعدی بیماریوں کے خلاف بہترین قوت مدافعت پیدا کرنے میں مدد کرتا ہے۔انہیں خوبیوں کی بدولت امریکی ادارے NASA نے اسے اکیسویں صدی کا اہم ترین پودا قرار دیا ہے۔

یاداشت بہتر بنائے
بڑھتی عمر کے ساتھ اکثر یاداشت کے مسائل پیدا ہونا شروع ہو جاتے ہیں، انسان چیزیں بھولنے لگتا ہے جس سے پریشانی پیدا ہوتی ہے، اگر آپ اس مسئلے سے دوچار ہیں تو اس کا حل سوہانجنا کے تیل میں موجود ہے کیونکہ اس کا استعمال یادداشت کو بھی بہتر بناتا ہے۔ یہ جسم کی قدرتی مدافعت بڑھاتا ہے جس سے نہ صرف دماغ بلکہ آنکھوں کو بھی تقویت ملتی ہے۔

1 2 3اگلا صفحہ

Leave a Reply

Back to top button