مختصر تحریریں

میرے رہبر بچانا نہیں جانتے!

……”یقین کیجئے ہم مغرب زدہ نوجوان اس جھکڑ (مغربی کلچر)کی زد میں آئے ہوئے ہیں۔ علمائے دین کا فرض ہے کہ ہمیں بچائیں۔ دِقّت یہ ہے کہ علمائے دین رد کرنا جانتے ہیں۔ موردِ الزام ٹھہرانا جانتے ہیں۔ تنقیدکرنا جانتے ہیں۔ بچانا نہیں جانتے۔ ان میں مشنری سپرٹ نہیں ہے۔ مشنری سپرٹ واعظ کرنے، تقریریں جھاڑنے، سرزنش کرنے میں نہیں ہوتی بلکہ جذبہِ ہمدردی سے خدمت کرنے میں ہوتی ہے۔ مجھے اس جھکڑ سے بچانے کے لئے وہ کہیں گے دیکھو یہ کافرانہ پہناوا چھوڑ دو۔۔۔
ہمارے راہبر کتنے معصوم ہیں۔۔۔ آج کے نوجوان کو اس جھکڑ سے نکالنا مقصود ہے تو پہلے دل میں اس کے لئے ہمدردیاں پیدا کرو۔“
ممتاز مفتی کی کتاب”تلاش“ سے اقتباس

Leave a Reply

Back to top button