Uncategorized

ناریل کے جادوئی فوائد…… طبیبہ مسز فرحت منظوم

ناریل (Coconut) خدا کا دیا گیا ایک ایسا تحفہ ہے کہ جس سے انسان بے شمار فائدے حاصل کر رہا ہے۔ ناریل کے تیل کے حیران کن فوائد ہیں۔ ناریل بلاشبہ اپنے اندر جادوئی کمالات رکھتا ہے۔ اسے ایسے ہی کھایا جائے یا اس کا پانی پیا جائے دونوں ہی صورتوں میں انسان کو فائدہ پہنچتا ہے، ہرے یا کچے ناریل میں وٹامن سی کے ساتھ ساتھ فائبر اورمنرلز وافر مقدار میں پائے جاتے ہیں۔ ناریل جسم کو طاقت دیتا ہے اور موٹاپا بھی لاتا ہے، اس کا تیل دماغی کمزوری اور بالوں کی نشوونما کیلئے نہایت مفید ہے، اس کا تیل بالوں میں لگانے سے سکری دور ہوتی ہے جبکہ ناریل دماغی خشکی کو بھی ختم کرتا ہے۔
جلے کا علاج
ناریل کا تیل جسم کے جلے ہوئے حصے پرلگانے سے نہ صرف متاثرہ ٹشوکے ٹھیک ہونے کے عمل کو تیز کرتا ہے بلکہ یہ ایک تہہ بنا دیتا ہے جو بیرونی مٹی، ہوا، بیکٹیریا اور وائرس سے روکتا ہے۔ ناریل کے پانی میں 93 سے94 فیصد پانی شامل ہوتا ہے جو انسان کی پیاس بجھانے کے ساتھ ساتھ جلد اور جسم کیلئے بھی فائدہ مند ہے۔ ناریل کا پانی اینٹی آکسیڈنٹ کا بہترین ذریعہ ہے جو جسم کو نقصان پہنچانے والے ذرات سے محفوظ رکھتا ہے۔ اس کے علاوہ یہ جسم میں انسولین لیول اور بلڈ پریشر کو کنٹرول میں رکھتا ہے۔ زیادہ تر شیمپو اور کنڈیشنر کا مرکزی جز بھی ناریل ہوتا ہے جس کی وجہ اس کی نمی بحال کرنے کی صلاحیت ہے، بالوں کے گرنے کی ایک بڑی وجہ نمی ختم ہوکر خشکی کا بڑھ جانا ہے۔
جلد کو نرم وملائم بنائے
ناریل کے تیل کے فوائد کا سلسلہ نہ رکنے والا ہے، لوگوں کی بہت بڑی تعداد اب بھی اس کے بے شمار فوائد سے لاعلم ہے۔ برصغیرپاک وہند کے کئی علاقوں میں ناریل کے تیل کو بالوں میں لگانے کے علاوہ کھانے اور مالش کے طور پر بھی استعمال کیا جاتا ہے۔ ناریل کا تیل قدرتی سن اسکرین کا کام کرتا ہے اس کا استعمال سورج کی تمازت سے رنگ وروپ کو گہنانے نہیں دیتا۔
دن میں ایک بار ناریل کے دودھ کی مالش کر کے 10منٹ کے بعد جلد کے مسائل سے نجات مل سکتی ہے۔ خواتین کیلئے جلد کو موسچرائزرکھنا بے حد ضروری ہے، ناریل کا تیل یا ناریل کا دودھ جلدکو نرم وملائم اورڈیپ موسچرائز کرنے کیلئے بہترین ہے۔ خواتین کو چاہئے کہ وہ آدھا کپ ناریل کے تیل یا ناریل کے دودھ میں ایک چمچہ وٹامن آئل کیپسول اور تھوڑی سی پسی ہوئی چینی شامل کر کے مکس کر لیں اور ایئر ٹائٹ جار میں رکھ دیں اور روزانہ مساج کریں۔ جلد کی خشکی اور داغ دھبے دور ہو جائیں گے اور جلد نرم وملائم اور جاذب نظر ہو جائے گی، خوبصورتی میں اضافہ ہو گا۔ چہرے کی جلد کو خوبصورت اور تروتازہ رکھنے کیلئے تیل میں چینی ملاکر اسے چہرے پر دس منٹ تک لگایا جائے، یوں مردہ خلیے ختم ہو جاتے ہیں اور اگر چینی کی جگہ کچھ نمک ملاکر روزانہ استعمال کیا جائے تو یہ جلد کو چھوت اور دانوں سے بچانے میں بہترین ثابت ہو گا۔
انڈوں کا تازہ رکھے
حیرت انگیز بات یہ بھی ہے کہ یہ تیل انڈوں کو ایک سال تل تازہ رکھ سکتا ہے، اگر آپ انڈوں کو دیر تک درست رکھنا چاہتے ہوں تو ان پر ناریل کے تیل کی ہلکی تہہ کی کوٹنگ کر دیں اس کے بعد یہ 9 سے10ماہ تک کھانے کے قابل رہ سکیں گے، اس کی وجہ یہ ہے کہ انڈوں پر تیل کی استعمال سے انڈوں کی سطح پر ایک قدرتی سیل کا بن جانا ہے جو آکسیجن کو باہر نکلنے سے روکتا ہے۔
زنگ سے نجات دلائے
ناریل کا تیل زنگ کو دور بھگاتا ہے، زنگ آلود چھریوں کو ناریل کے تیل میں رکھ کر زنگ سے محفوظ کیا جا سکتا ہے یعنی زنگ کو صاف کرنے کیلئے زنگ آلود چیز کو ایک گھنٹے تک ناریل کے تیل میں رکھا جائے اس کے بعد اسے صاف کر کے گرم پانی سے دھو لیا جائے تو زنگ صاف ہو جائے گا۔ اس سے کھڑکیوں اور دروازوں کے زنگ آلود قبضے بھی صاف کئے جا سکتے ہیں۔
شوگر لیول نارمل رکھے
ناریل کا پانی جسم میں شوگر کی مقدار کم کرنے میں مدد کرتا ہے اور بعض سینئر اطباء کے مطابق شوگر کے مریض بغیر کسی خدشات کے ناریل کا پانی اپنی روزمرہ غذا میں استعمال کر سکتے ہیں۔ ناریل کے پانی میں فائبر کے علاوہ میگنیشیم بھی پایا جاتا ہے جو شوگر کی اقسام کے دوسرے درجے کے مریضوں میں شوگر کو کم کرنے میں مدد دیتا ہے۔
ناخنوں کا معالج
اکثر افراد کو یہ شکایت رہتی ہے کہ ان کے ناخن بڑھ نہیں پاتے اور حیرت انگیز بات تو یہ ہے کہ اس کا حل بھی ناریل کے تیل میں ہی موجود ہے، ناریل کا تیل ناخنوں کو تیزی سے بڑھانے کی بھرپورصلاحیت رکھتا ہے، ناریل کا تیل ناخنوں پر لگانے سے ناخن طاقتور ہوتے ہیں اور ساتھ ہی ساتھ بڑھتے بھی ہیں۔
پھٹے ہونٹوں اور ایڑھیوں کا ڈاکٹر
چوٹ ٹھیک کرنے کیلئے ناریل کے تیل تو ہوتا ہی ہے لیکن اگر رات کو سونے سے پہلے پاؤں کی ایڑھیوں پر یہ تیل لگا کر موزے پہن لئے جائیں تو پاؤں کی پھٹی ہوئی ایڑھیاں ایک ہفتے میں ٹھیک ہو سکتی ہیں اسی طرح پھٹے ہوئے ہونٹوں پر بھی ناریل کا تیل لگانے سے ہونٹ نرم وملائم ہو جاتے ہیں، رات کو ہونٹوں پر معمولی ساتیل لگا کر سوجائیں تو ہونٹ کسی بھی موسم میں پھٹنے سے بچ سکتے ہیں۔
گردوں کا محافظ
ناریل پر کی گئی تحقیق کے مطابق ناریل کا پانی گردوں کے امراض میں بے حد مفید ہے۔ ناریل کا پانی پینے سے گردوں میں پتھری ہونے کے امکانات کم ہو جاتے ہیں، اس کے علاوہ ناریل کا پانی کرسٹل کو گرودوں میں چپکنے سے روکتا ہے اور بآسانی اس کے اخراج میں مدد کرتا ہے۔ اس لئے سادہ پنی پینا تو گردوں کے امراض میں مفید ہے ہی لیکن ناریل کا پانی سادہ پانی کا بہترین نعم البدل ہو سکتا ہے۔
دانت مضبوط اور چمکدار بنائے
ناریل کا تیل اور نمک دانتوں میں روزانہ تین سے چار منٹ تک لگا کر رکھنے سے دانت مضبوط، چمکدار اور کیڑوں سے محفوظ رہتے ہیں۔
انرجی سے بھرپور مشروب
ناریل کو مشروبات میں بھی استعمال کیا جاتا ہے۔ ورزش کے بعد زیادہ تر افراد انرجی بڑھانے والے مشروبات استعمال کرتے ہیں لیکن ان مشروبات کی جگہ اگر ناریل کا پانی استعمال کر لیا جائے تو اس کے فائدے دیگر مشروبات کے مقابلے میں کئی گنا زیادہ ہوتے ہیں۔ ناریل کا پانی جسم میں پانی کی کمی کو کم کرنے، پیٹ اور معدہ کی تکلیف کم کرنے میں بھی مدد کرتا ہے۔
آنکھوں کے گرد سیاہ حلقوں سے نجات دلائے
ناریل کے تیل کی ہلکے ہاتھ سے باقاعدہ مالش سے آنکھوں کے گرد موجود سیاہ حلقے اور جھریوں کے خاتمے میں مدد ملتی ہے۔
کیل مہاسوں سے نجات
یہ تیل جہاں وٹامنز اورمنرلز سے بھرپو ہوتا ہے وہیں اس میں اینٹی بیکٹیریل اور اینٹی فنگل اجزاء شامل ہوتے ہیں جس کی وجہ سے اس کا باقاعدہ استعمال کیل مہاسوں کو بننے سے روکتا ہے۔ ناریل کا تیل قدرتی موسچرائزر ہے اور یہ خشکی کو ختم کر کے جلد کو نرم وملائم بناتا ہے۔

Leave a Reply

Back to top button