تازہ تریندیسی ٹوٹکےصحت

نیرولی کا تیل: حجلہ عروسی کا آرام اور سکون

یورپ میں نارنگی کے تیل کو نیرولی آئل کہا جاتا ہے۔ اور یہ نام اٹلی کی شہزادی ۔۔۔ پرنسس آف نیرولا کی نسبت سے ہے۔ اسے یہ خوشبو بہت پسند تھی۔ مالٹے کے پھولوں کو یورپ میں دلہنوں کے ہاروں اور حجلہ عروسی کی آرائش میں استعمال کیا جاتا تھا۔ تا کہ جب نوبیاہتا جوڑا اپنے بستر پر آئے تو اعصاب پرسکون رہیں۔ نیرولی کا تیل اروما تھراپی میں استعمال کیا جاتا ہے۔

نیرولی کا درخت سدا بہار ہوتا ہے۔ پتے چمکدار گہرے سبز اور سفید پھول ہوتے ہیں۔ اس درخت پر پھول کھلنے کے دو موسم آتے ہیں، جب غنچے چنے جاتے ہیں۔ ایک مئی میں اور دوسرا اکتوبر میں۔

اس درخت کا تعلق مشرق بعید سے ہے لیکن یہ بحر روم کے خطہ سے خوب ہم آہنگ ہو چکا ہے۔ نیرولی کا تیل تیار کرنے والے بڑے ممالک میں اٹلی، تیونس، مراکش، مصر، امریکہ اور بالخصوص فرانس ہیں۔ اس تیل نیرولی پرتگال بھی کہا جاتا ہے۔

یورپ میں نارنگی کے تیل کو نیرولی آئل کہا جاتا ہے۔ اور یہ نام اٹلی کی شہزادی ۔۔۔ پرنسس آف نیرولا کی نسبت سے ہے۔ اسے یہ خوشبو بہت پسند تھی۔ مالٹے کے پھولوں کو یورپ میں دلہنوں کے ہاروں اور حجلہ عروسی کی آرائش میں استعمال کیا جاتا تھا۔ تا کہ جب نوبیاہتا جوڑا اپنے بستر پر آئے تو اعصاب پرسکون رہیں۔ نیرولی کا تیل اروما تھراپی میں استعمال کیا جاتا ہے۔

نیروولی آئل کے صحت سے متعلق فوائد
نیرولی کا تیل اینٹی ڈیپریسنٹ اور اینٹی سیپٹک ہوتا ہے۔ یہ جلد کی تازگی، دردوں کا خاتمہ، ہائی بلڈ پریشر اورلیبر پین،قبل از وقت سنڈروم،
سوزش، جسمانی تناؤ اور اضطراب وغیرہ کے امراض میں استعمال کیا جاتا ہے۔

کاسمیٹکس مصنوعات:
نیروولی کے تیل کو آجکل کاسمیٹکس میں بہت زیادہ استعمال کیا جاتا ہے۔خاص طور پر جسمانی لوشن میں اسکا استعمال عام ہے۔ کیونکہ اس میں پائے جانے کیمیائی اجزا جلد کو تروتازہ رکھنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔

ذہنی دباؤ اور اضطراب:
جیسا کہ پہلے بیان کیا جا چکا ہے کہ اس تیل کو اروما تھراپی میں بھی استعمال کیا جاتا ہے۔ نیرولی کی پھولوں اور اس کے تیل کی خوشبو ذہنی دباؤ کو ختم کرنے اور اضطرابی کیفیت کو کم کرنے میں لاجواب ہے۔

ہائی بلڈ پریشر:
ہائی بلڈ پریشر کو بھی اس سے کنٹرول کیا جاتا ہے۔ ہائی بلڈ پریشر کے مریض کو جب اسکی خوشبو سنگھائی جاتی ہے تو اس کیفیت نارمل ہونا شروع ہو جاتی ہے۔

جلد کی حفاظت:
نیرولی کے تیل کو جلد حفاظت کا ضامن سمجھا جاتا ہے۔ اس کے تیل میں شامل کیمیائی اجزا جلد کو نہ صرف نرم و ملائم رکھتے ہیں بلکہ اس کی قدرتی نمی کو یہ بحال کرتا ہے اور اسے پھر برقرار بھی رکھتا ہے۔ جلد پر پائی جانے والی خشکی کو یہ ختم کر دیتا ہے۔

1 2 3اگلا صفحہ

Leave a Reply

Back to top button