خبریںپاکستان سے

پیپلزپارٹی نے مارچ اور جلسے کی حمایت کی لیکن دھرنے میں شمولیت کی گنجائش نہیں: بلاول بھٹو

ویب ڈیسک: پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی نے پہلے دن سے مارچ اور جلسے کی حمایت کی لیکن دھرنے میں شمولیت کی گنجائش نہیں ہے، حکومت عوام نہیں کسی اور کی خواہش پر بنی ہے.
بلاول بھٹو نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کے خلاف تمام اپوزیشن کا مطالبہ ایک ہے لیکن پیپلز پارٹی کسی دھرنے میں شریک نہیں ہوگی۔
انہوں نے کہا کہ جلسے اور مارچ کے علاوہ دھرنے میں شرکت سے متعلق اگر پیپلز پارٹی کی سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی پالیسی کا جائزہ لے گی تو فیصلہ حتمی ہو گا
بلاول بھٹو زرداری نے سانحہ تیز گام پر وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری طور پر استعفیٰ دیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ سانحہ تیز گام کی تحقیقاتی ہونی چاہیے۔
چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی نے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ حکومت پر جو تنقید ہوری ہے اس کا مرکزی نقطہ یہ ہے کہ موجودہ حکومت منتخب نہیں بلکہ سلیکٹڈ ہے۔ موجودہ حکومت شہریوں کے سماجی اور آئینی حقوق پامال کررہی ہے، ہم ناصرف حکومت کی کارکردگی پر تنقید کرتے ہیں بلکہ اس کی آئینی حیثیت پر بھی اعتراض اٹھاتے ہیں۔
بلاول بھٹو زرداری نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ تمام صوبوں کی طرح صوبہ سندھ میں بھی کمی اور کوتاہیاں ہیں لیکن بہت ضروری ہیں کہ حکومتیں آئینی ہوں۔
بلاول بھٹو نے حکومت کو خارجہ پالیسی پر نظرثانی کا مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ میں سمجھتا ہوں کہ مقبوضہ کشمیر پر تاریخی حملہ ہوا لیکن وزیراعظم عمران خان نے کرتارپور راہداری کھول کر کشمیری بھائیوں کے لیے کیا پیغام دیا. عوام سمجھتے ہیں کہ کشمیر کا سودا کر لیا گیا تاہم وزیراعظم عمران کو عوام کے خدشات دور کرنے چاہیے۔

Leave a Reply

Back to top button