Welcome to HTV Pakistan . Please select the content and listen it   Click to listen highlighted text! Welcome to HTV Pakistan . Please select the content and listen it
تازہ ترینخبریںکاروبار

چاول کی وافر پیداوار سے ریکارڈ توڑ برآمد متوقع

فخر امام کاکہنا تھا کہ ’یہ کامیابی قابل ذکر ہے اور حکومت کی کسان دوست پالیسی کا نتیجہ ہے، کسانوں کو ان کی لگن اور جدوجہد پر خراج تحسین پیش کرنا چاہیے ان ہی کی وجہ سے ہم بے مثال سنگ میل عبور کر رہے ہیں۔

وفاقی وزیر برائے غذائی تحفظ و تحقیق سید فخر امام کاکہنا ہے کہ ملک نے رواں سال چاول کی 90 لاکھ ٹن کی فصل کا ہدف عبور کیا ہے جس سے اجناس کی تاریخی برآمدات کی نشاندہی ہوتی ہے۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق وفاقی وزیر فخر امام کا کہنا تھا کہ ملک میں رواں سال برآمدات کے لیے 80 لاکھ30 ہزار ٹن کی مقدار موجود ہے جس کی مالیت 4 ارب85 کروڑ ڈالر ہوگی۔

انہوں نے کہاکہ چونکہ اب ترسیلات کے لیے نرمی کردی گئی ہے تو پاکستان کو 80 لاکھ 30 ہزار ٹن کی فصل کی برآمد کے لیے تمام تر ممکنہ اقدامات کرتے ہوئے 4 ارب 85 ڈالر کی رقم کمانی چاہیے اور یہ رقم گزشتہ سال سے 2 ارب 74 ارب ڈالرز زیادہ ہوگی۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے کہا کہ رواں مالی سال میں چاول کی پیداوار شعبہ برآمدات میں سب سے زیادہ نمو باعث بنے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ ملک گزشتہ تین سال سے اپنی پالیسیوں کی باعث ریکارڈ پیداوار کے ہدف عبور کر رہا ہے، گزشتہ سال پاکستان میں 84 لاکھ 10 ہزار ٹن چاول پیدا ہوئے تھے۔

انہوں نے کہا کہ رواں سال نومبر تک ملک میں چاول کی کھپت 31 لاکھ ٹن رہی جبکہ 33 لاکھ 40 ہزار ٹن چاول برآمد کیے گئے جس کی مالیت 2 ارب 11 کروڑ ڈالرز تھی۔

فخر امام کاکہنا تھا کہ ’یہ کامیابی قابل ذکر ہے اور حکومت کی کسان دوست پالیسی کا نتیجہ ہے، کسانوں کو ان کی لگن اور جدوجہد پر خراج تحسین پیش کرنا چاہیے ان ہی کی وجہ سے ہم بے مثال سنگ میل عبور کر رہے ہیں۔

وزیر غذائی تحفظ نے کہا کہ آئندہ ماہ تک چاول کا مجموعی ذخیرہ ایک کروڑ 14 لاکھ 30 ہزار ٹن ہوگا اور ملکی کھپت کے لیے 34 لاکھ ٹن نکالنے کے بعد اس کی کل مقدار 80 لاکھ 30 ہزار ٹن ہوگی، جو برآمدات کے لیے وافر مقدار ہے۔

باسمتی اور موٹے چاول کی برآمدات کی حالیہ اوسط قیمت بالترتیب 870 ڈالرز اور 490 ڈالرز فی ٹن ہے، اس قیمت پر رواں سال پاکستان نے باسمتی چاول کی برآمدات پر 2 ارب 10 کروڑ روپے حاصل کیے جبکہ موٹے چاول کی برآمدات پر پاکستان کو 2 ارب 75 کروڑ ڈالر کا منافع ہوا ہے۔

مالی سال 21-2020 میں پاکستان نے 35 لاکھ ٹن چاول برآمد کیےجس کی مالیت 2 ارب11 کروڑ تھی، یہ برآمدات مالی سال 2020 کے مقابلے 12 فیصد کم تھی، اس دوران کورونا وائرس کی پابندیوں سے برآمدات شدید متاثر ہوئی تھی۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ پاکستان فی الحال 5 ممالک کو چاول برآمد کر رہا ہے جس میں چین، کینیا، متحدہ عرب امارات، افغانستان اور سعودی عرب شامل ہیں، متعدد ممالک ہیں جہاں برآمدات کے اچھے مواقع موجود ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستانی سفارت خانے اور ہائی کمیشنز کو برآمدات بڑھانے کا ہدف سونپنا چاہیے۔

Leave a Reply

Back to top button
Click to listen highlighted text!