HTV Pakistan
بنیادی صفحہ » انٹرویوز » ڈرامہ بیرونِ ممالک ہمارے وقار کا معاملہ بن چکا ہے: اداکارہ فیروزہ

ڈرامہ بیرونِ ممالک ہمارے وقار کا معاملہ بن چکا ہے: اداکارہ فیروزہ

پڑھنے کا وقت: 3 منٹ

ٹی وی آرٹسٹ اور معروف ماڈل کی ثاقب اسلم دہلوی سے گپ شپ
فیروزہ محمد نے چند سال قبل شوبز کی دنیا میں قدم رکھا اور دیکھتے ہی دیکھتے ٹی وی کی ضرورت بن گئیں اور مارننگ شوز میں بھی ان کی آمد سے چار چاند لگنے لگے۔ وہ اداکارہ متھیرا محمد کی بہن ہیں۔ گزشتہ دنوں ان کے ساتھ ایک خصوصی نشست کا اہتمام کیا گیا جس میں ہونے والی گفتگو آپ کے لئے پیش کی جاری ہے۔

سوال: فیروزہ سب سے پہلے تو ہمیں یہ بتائیں کہ آپ کہاں پیدا ہوئیں؟
فیروزہ محمد : جی۔۔۔ میں کراچی میں پیدا ہوئی جب کہ میری پرورش زمبابوے میں ہوئی۔ وہیں پلی بڑھی اور پھر کراچی آ گئی۔
سوال: آپ کا زمبابوے میں کیسے جانا ہوا؟
فیروزہ: میری والدہ کا تعلق کراچی سے ہے اور والد کا زمبابوے سے، اسی لئے میں وہاں گئی اور وہیں میری پرورش ہوئی۔

سوال:آپ اتنی اچھی اردو کیسے بول لیتی ہیں جب کہ آپ نے تو اپنی زندگی کا آدھا حصہ زمبابوے میں گزارا ہے؟
فیروزہ : مجھے شروع میں تو بہت مشکلات پیش آئیں۔ کراچی آ کر میں نے اردو زبان پر بہت محنت کی۔ اب بھی تھوڑا بہت پڑھنے میں اٹک جاتی ہوں یا کبھی کسی لفظ کا تلفظ غلط ہو جائے تو ہدایت کار رہنمائی کر دیتے ہیں۔
سوال: آپ کے شوبز کیریئر کی ابتداء کس پروجیکٹ سے ہوئی تھی؟
فیروزہ: میں نے پرائیوٹ بنک کے ایک اشتہار سے کیرئیر کا آغاز کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں! ایسے کردار کرنا چاہتی ہوں جو دیکھنے والوں کے دل میں اُتر جائیں: مریم انصاری

سوال: شوبز میں آپ کی بہن متھیرا نے آپ کی کتنی سپورٹ کی؟
جواب: متھیرا میری بہت اچھی بہن ہیں۔ ہم دونوں میں بہت پیار ہے۔ میری کامیابی میں اُس کی بہت زیادہ سپورٹ شامل ہے۔
سوال: آپ کو شوبز فیلڈ کیسی لگی؟
فیروزہ : یہ بہت اچھی فیلڈ ہے۔ اگر اس میں آپ اچھے طریقے سے وقت گزارتے ہیں تو آپ کو شہرت بھی ملتی ہے اور عزت بھی۔ مجھے یہاں ہر انسان اچھا لگا کیونکہ میں خود اچھی ہوں۔ نیک نیتی سے کام کرتی ہوں،کبھی جلد بازی میں کام خراب نہیں کرتی۔

سوال: کیا آپ نے سوپ بھی کئے ہیں؟
فیروزہ: ’’یہی زندگی ہے‘‘ جویریہ سعود کی پروڈکشن میں بننے والا سوپ کیا تھا۔ اس پروجیکٹ کو توقعات سے زیادہ کامیابی ملی۔ اس کے ہدایت کار سید نعمان تھے۔
سوال: کیا موجودہ دور میں نیو ٹیلنٹ کو بھرپور مواقع فراہم کئے جا رہے ہیں؟
فیروزہ: جی ہاں نیو ٹیلنٹ کو بھرپور مواقع مل رہے کیونکہ پروڈکشن ہاؤسز کی تعداد کافی ہو چکی ہے جس کے باعث آج نئے آنے والوں کے لئے بہت زیادہ مواقع موجود ہیں۔
سوال: آپ مصنفین اور ہدایت کاروں کے لئے کوئی پیغام دینا چاہیں گی؟
فیروزہ: پاکستانی ڈرامے بیرونی دنیا میں بھی دیکھے اور پسند کئے جا رہے ہیں اس لئے ہمیں معیاری کام پر ہی فوکس رکھنا چاہیے کیونکہ یہ اب صرف ڈرامہ نہیں رہا بلکہ بیرونی دنیا میں ہمارے وقار اور عزت کا معاملہ بن چکا ہے۔

یہ بھی پڑھیں! ماں کی دُعائیں ہر مقام پر کام آئیں: محسن عباس حیدر

سوال: کیا آپ ہر پروجیکٹ قبول کر لیتی ہیں؟
فیروزہ: میری شروع سے کوشش رہی ہے کہ میں اچھا کام کروں۔ لالچ میں آکر ہر پروجیکٹ قبول نہیں کرتی۔ ایک وقت میں لاتعداد آفرز ہوتی ہیں مگر سلیکٹڈ کام ہی کرتی ہوں۔ میری کوشش ہوتی ہے ایسے لوگوں کے ساتھ کام کروں جن سے سیکھنے کو بھی ملے۔
سوال: آپ کی مستقبل کی کیا پلاننگ ہے؟
فیروزہ: میں خیالی پلاؤ نہیں پکاتی ہوں کیونکہ میرا ماننا ہے کہ خیالی پلاؤ کی ہنڈیا جلد ٹوٹ جاتی ہے اس لئے خوب محنت اور لگن سے کام کرتی ہوں جو آپ کے سامنے ہے۔
سوال۔ آپ کی فٹنس کا راز کیا ہے؟
فیروزہ: ورزش۔۔۔ میں ورزش باقاعدگی سے کری ہوں۔

یہ بھی پڑھیں! کل بھی فلم انڈسٹری کے لئے حاضر تھا، آج بھی ہوں: شامل خان

سوال: آپ کے پسندیدہ اداکار اور اداکارہ کون ہیں؟
فیروزہ: ویسے تو ہماری انڈسٹری میں بڑے اچھے اچھے اور قابل تقلید اداکار موجود ہیں لیکن مجھے ثمینہ پیرزادہ اور نعمان اعجاز زیادہ اچھے لگتے ہیں۔
سوال: اگر آپ کو پاکستان سے باہر کام کرنے کی آفر ہوئی تو آپ کا کیا جواب ہو گا؟
فیروزہ: یہ تو آفر پر منحصر ہے۔ فی الحال تو میرے پاس ایسی کوئی آفر نہیں ہے مگر جب بھی پاکستان سے باہر کام کیا، اچھا کام کروں گی تاکہ اپنے ملک کا نام روشن کر سکوں۔
سوال: آپ سوشل میڈیا کے بارے میں کیا کہیں گی؟
فیروزہ: سوشل میڈیا ہر عام و خاص کی مضبوط آواز ہے۔ یہ ایک ایسا پلیٹ فارم ہے جہاں لوگ اپنے جذبات کا کُھل کر اظہار کرتے ہیں۔ لیکن میں یہ سوچتی ہوں کہ اس کا استعمال کچھ حدود میں رہ کر کیا جانا چاہیے۔

جواب دیجئے