تازہ تریندیسی ٹوٹکےصحت

کھجور: سپر فوڈ قرار دئیے جانے والاجنتی پھل

اب اگر ہم کھجور کا سائنسی تجزیہ کریں تو معلوم ہوتا ہے کہ کھجور میں فائبر،کاربن، فاسفورس، پوٹاشیم، کاپر، کیلشیئم، مینگنیز، میگنیشیم اور وٹامن بی 6 جیسے اجزا بڑی مقدار میں پائے جاتے ہیں۔ جو ہماری صحت اور تندرستی کیلئے بنیادی جز ہیں۔ کجھور کے چند ایک فائدے درج ذیل ہیں۔

قرآن پاک کی سورہ البقرہ کی آیت نمبر 25 میں اللہ تعالیٰ یوں ارشاد فرماتے ہیں ”اور جو لوگ ایمان لائے اور نیک عمل کرتے رہے، ان کو خوشخبری سنا دو کہ ان کے لیے (نعمت کے) باغ ہیں، جن کے نیچے نہریں بہہ رہی ہیں۔ جب انہیں ان میں سے کسی قسم کا میوہ کھانے کو دیا جائے گا تو کہیں گے، یہ تو وہی ہے جو ہم کو پہلے دیا گیا۔ اور ان کو ایک دوسرے کے ہم شکل میوے دیئے جائیں گے اور وہاں ان کے لیے پاک بیویاں ہوں گی او وہ بہشتوں میں ہمیشہ رہیں گے۔“قرآن پاک میں چھ پھلوں کا ذکر کیا گیا ہے، جن میں کھجور، کیلا، انار،انجیر، زیتون اور انگور شامل ہیں۔ آج کی جدید سائنس نے ان چھ پھلوں کی حقانیت اور افادیت کوتسلیم کرتے ہوئے انہیں ”سُپر فوڈز“ قرار دیا ہے اور تحقیق کے مطابق بتایا ہے جو شخص یہ پھل مناسب مقدار میں کھاتا رہے گا وہ کبھی بیمار نہ ہوگا۔

پھرسورۃ الرحمٰن۔ آیت نمبر68 میں ارشاد باری تعالیٰ ہے کہ “ان میں میوے اور کھجوریں اور انار ہیں “۔ کھجور ایک ایسا پھل ہے جس کا قرآن میں ذکر سب سے زیادہ آیا ہے۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے بھی کھجور کی بہت افادیت بیان فرمائی ہے۔ بلکہ وہ خود صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم بھی کجھور شوق سے کھایا کرتے تھے، اور دوسروں کو بھی کھانے کی تاکید کیا کرتے تھے۔

کھجور کی اقسام:
مشرقی وسطیٰ اور مغربی ایشیا میں کھجور کی متعدد اقسام پائی جاتی ہیں جن میں چند مشہور کھجوریں کچھ یوں ہیں: عنبر، مبروم، عجوہ، سویدا، صفاوی، خلاص، جبیلی، شقری، رشودیہ، صقعی، خصاب، ربیعہ، قلمی، سخل، صفری، غر، حلیہ، خضری، مسکانی، شلابی، روتانہ، اور مکتومی۔ ان کے علاوہ کھجور کی اور بھی بہت سی اقسام ہیں۔ عرب ممالک میں ہر سال کھجور کی نمائش لگائی جاتی ہے جس میں کھجوروں کی سینکڑوں اقسام عوام کے سامنے پیش کی جاتی ہیں۔کھجور کی ان اقسام میں سے سب سے زیادہ عجوہ کو پسند کیا جاتا ہے۔

1 2 3 4اگلا صفحہ

Leave a Reply

Back to top button