تازہ تریندیسی ٹوٹکےصحت

گڑھل یا گل خطمی: مردانہ بیماریوں کا نہایت موثر علاج

گڑھل یاگل خطمی ا ینٹی آکسیڈینٹ ہے۔اس کے100گرام پھولوں میں توانائی49کیلوری، فائبر2.3گرام، پروٹین1.9گرام، چربی0.1گرام، کاربوہائیڈریٹ 12.3 گرام، کیلشیم 1.72 ملی گرام، آئرن57ملی گرام، وٹامن سی14ملی گرام، بیٹا کیروٹین 300 ملی گرام پائے جاتے ہیں۔

گڑھل یا گل خطمی ملائیشیا کا قومی پھول ہے جبکہ یہ پاکستان میں عمومی طور پر سکول، کالجز اورباغیچوں میں لگا ہوتا ہے اور ہم اسے محض پھول سمجھ کر ضائع کر دیتے ہیں جبکہ اس کے بہت سے فوائد ہیں۔عرب اور افریقہ میں اسکا شربت اور قہوہ بکثرت استعمال ہوتا ہے اور اب مغربی ممالک بھی اسے استعمال کرنے لگے ہیں۔ یہ اردو میں گڑھل، گل خطمی، عربی میں کرکدے اور انگریزی میں ہبسکس(Hibiscus) کہلاتا ہے۔

گڑھل بہت سی شاخوں والاانار کے درخت کے برابر جھاڑی کی طرح درخت ہے۔جس کے پتے توت کے پتوں کی طرح ہوتے ہیں۔ پھول گہرے سرخ رنگ کا ہوتاہے۔لیکن اندرسے خالی پیالے کی طرح جس کی ڈنڈی لمبی ہوتی ہے۔اس پودے کو باغ باغیچوں میں خوبصورتی کیلئے لگایاجاتاہے۔کیونکہ یہ بہت سرسبز ہوتاہے اورسرخ رنگ کے بڑے بڑے پھول خوبصورت لگتے ہیں یہ جنگل میں خودرویا اس کی قلمیں لگائی جاتی ہیں۔اسکی جڑ سرخ ہوتی ہے۔

سرخ پھولوں کے علاوہ اب یہ کئی رنگوں میں بھی ہوتا ہے۔جن میں سفید، اورینج، پیلے، گلابی، سرخ،نارنگی،نیلا، فیروزی،جامنی، بھورا، سرمئی، چاندی، سنہرا،سبز بھی شامل ہیں۔دلچسپ بات یہ ہے ہندو اپنے دیوی، دیوتاؤں کی عبادت کرنے کے لئے ان پھولوں کا استعمال کرتے ہیں۔ پھول اصل میں کھانے کے قابل ہیں اور بحر الکاہل کے جزائر،وسطی بھارت میں اس کو ترکاری کے طور بھی کھایا جاتا ہے جبکہ اکثر سلاد کے طورپراستعمال کرتے ہیں۔اسکا پھول بطور دوا بھی استعمال کیاجاتاہے۔

یہ بلڈ پریشر کو کنٹرول کرنے کے لیے بے حد مفید ہے جن حضرات کو بلند فشار خون کی شکایت ہو دن میں تین بار اس کا قہوہ ٹھنڈا کر کے پئیں جبکہ جنکا فشار خون پست ہو یعنی لو ہوتا ہو وہ اسکا گرم قہوہ پئیں۔

گڑھل یاگل خطمی میں پائے جانے والے کیمیائی اجزا:
گڑھل یاگل خطمی ا ینٹی آکسیڈینٹ ہے۔اس کے100گرام پھولوں میں توانائی49کیلوری، فائبر2.3گرام، پروٹین1.9گرام، چربی0.1گرام، کاربوہائیڈریٹ 12.3 گرام، کیلشیم 1.72 ملی گرام، آئرن57ملی گرام، وٹامن سی14ملی گرام، بیٹا کیروٹین 300 ملی گرام پائے جاتے ہیں۔

گڑھل یاگل خطمی کے طبی فوائد:

ڈپریشن غم اور پریشانی کا علاج:
مقوی حواس ہونے کی وجہ سے ہسٹریا خفقان، جنون اور وحشت میں مفیدہے۔

1 2 3اگلا صفحہ

Leave a Reply

Back to top button