تازہ ترینخبریںدنیا سے

ہندو نے نماز جمعہ کی ادائیگی کے لیے اپنا گیراج پیش کردیا

ایسے میں بھارتی ریاست ہریانہ میں مسلمانوں کی نمازِ جمعہ کے لیے سکھوں نے بڑا اعلان کیا ہے اور نماز جمعہ کی ادائیگی کے لیے گوردوارہ کھولنے کا فیصلہ کیا ہے۔

بھارت میں انتہاپسندوں کی جانب نماز جمعہ کی ادائیگی سے روکنے پر ایک ہندو بزنس مین نے اپنا گیراج مسلمانوں کے لیے کھول دیا، جہاں انہوں نے نماز ادا کی۔

سوشل میڈیا پر ایک بھارتی صارف نے ہندو کے گیراج میں مسلمانوں کے نماز جمعہ ادا کرنے کی ویڈیو شیئر کی ہے۔

صارف نے ویڈیو کے کیپشن میں لکھا کہ ایک آٹو موبائل مارکیٹ میں موجود ایک گیراج کے مالک اکشے یادیو نے اپنے گیراج کے دروازے مسلمانوں کے لیے کھول دیے جہاں انہوں نے آسانی کے ساتھ نماز جمعہ کی ادائیگی کی۔

انہوں نے کہا کہ لوگوں کے درمیان یکجہتی پیدا کرنے کے لیے یہ ایک چھوٹی سی کوشش ہے جس سے نفرت پھیلانے والی قوتوں کو شکست کا سامنا ہوگا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل بھارتی ریا ست ہریانہ میں ہندوؤں کے ستائے مسلمانوں کی نمازِ جمعہ کے لیے سکھوں نے گوردوارہ کھولنے کا اعلان کیا۔

انتہا پسند ہندوؤں نے گڑگاؤں کے میدانوں میں نماز جمعہ کی ادائیگی عملاً ناممکن بنا رکھی ہے۔

پولیس کی جانب سے نماز کی اجازت کے باوجود انتہا پسند ہندو عین نماز کے وقت آکر مظاہرے اور پوجا کرتے ہیں۔

انتہا پسند ہندو میدان میں گوبر پھیلا کر نماز جمعہ ادا نہیں کرنے دیتے۔

ایسے میں بھارتی ریاست ہریانہ میں مسلمانوں کی نمازِ جمعہ کے لیے سکھوں نے بڑا اعلان کیا ہے اور نماز جمعہ کی ادائیگی کے لیے گوردوارہ کھولنے کا فیصلہ کیا ہے۔

Leave a Reply

Back to top button