دلچسپ و حیرت انگیز

مٹی، لکڑی سے بنی یہ قدیم اور خوبصورت مسجد کس ملک میں ہے؟

مذہب اسلام خطہ عرب سے شروع ہوا اور دنیا بھر میں پھیلا، دنیا کے تقریباً ہر ملک میں مساجد موجود ہیں لیکن اسلامی ممالک میں بے شمار خوبصورت اور قدیم مساجد ہیں جن کے فن تعمیر کو لوگ آج بھی داد دیتے ہیں۔

ایسی ہی ایک قدیم مسجد اور خوبصورت سعودی عرب میں بھی ہے جس کی تعمیر میں مٹی، لکڑی اور پتھروں کا استعمال ہوا۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق سعودی عرب میں الحدود الشمالیہ ریجن کے رفحا گورنریٹ میں واقع ’مسجد لینہ‘ ریجن کی قدیم مسجد ہے جو اپنے قدیم طرز تعمیر کی وجہ سے منفرد حیثیت رکھتی ہے۔

مسجد لینہ کی تعمیر تقریباً 1370 ہجری میں ہوئی تھی اور اس کو مٹی، پتھر، لکڑی اور کھجور کے درخت کے پتوں سے بنایا گیا تھا۔ یہ تاریخی مسجد آج بھی آباد ہے اور یہاں پانچوں وقت کی نمازیں ادا کی جاتی ہیں۔

ابتدائی طور پر 600 مربع میٹر رقبے پر گارے اور پتھر سے مسجد کی تعمیر شروع کی گئی جبکہ مسجد کے ساتھ ’بعثیہ‘ نام کا کنواں بھی کھودا گیا جسے نمازی وضو اور پانی پینے کے لیے استعمال کرتے تھے۔

مسجد لینہ کو قدیم نجدی طرز پر تعمیر کیا گیا، 200 نمازیوں کی گنجائش والی مسجد لینہ کے خوبصورت ستون، دیوار میں بنے قرآن کے شیلف اور دلکش روشندان نجدی فن تعمیر کی عکاسی کرتے ہیں۔

لینہ مسجد کی تاریخی اہمیت کی ایک وجہ اس کا قدیم بازار کے ساتھ  ہونا بھی ہے جو کہ 1352 ہجری میں قائم ہوا تھا اور یہ بازار گزشتہ صدی کے وسط میں مملکت کے بڑے تجارتی مراکز میں شامل تھا۔

ثقافتی ورثے کا حامل بازار 5 ہزار مربع میٹر پر پھیلا ہوا ہے اور اس میں 80 دکانیں ہیں، جبکہ  یہ بازار صحرا، مسافروں اور قافلوں کی آمد کی کہانیوں کو بھی بیان کرتا ہے۔

Thanks ARY News

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button