فن اور فنکار

2015 کی متوقع پاکستانی فلمیں

پاکستان کی فلمی صنعت آزادی کے بعد جس تیزی سے عروج پر گئی اور بولی وڈ کا بھرپور مقابلہ کیا اسی قدر رفتار سے وہ زوال کا بھی شکار ہوئی خاص طور پر گزشتہ دو، تین دہائیوں کے دوران لولی وڈ لگ بھگ ختم ہو کر ہی رہ گیا اس دوران کچھ اچھی فلمیں تو آئیں مگر گنڈاسہ فلموں کے کلچر کے سامنے کچھ نہ کرسکیں۔

تاہم ‘خدا کے لیے’ اور ‘بول’ جیسی فلموں کے بعد پاکستانی سینما میں تبدیلی کی ایک امید پیدا ہوئی جسے ٹی وی چینلز سے بڑی اسکرین میں نام بنانے کے خواہشمند فنکاروں نے آگے بڑھایا اور ‘میں ہوں شاہد آفریدی، وار’ اور دیگر کی کامیابی سے فلمی صنعت بظاہر بحالی نو کے قریب پہنچ چکی ہے۔

اس وقت نئے مگر باصلاحیت اداکاروں اور ڈائریکٹرز کی فلمیں تیاری کے مرحلے سے گزر رہی ہیں اور جلد سینما اسکرینوں پر نظر آئیں گی، جن کے بارے میں اکثر خبریں بھی سامنے آتی رہتی ہیں مگر پرستاروں کی آسانی کے لیے ہم نے چند آنے والی فلموں کی فہرست مرتب کرنے کے ساتھ ان کے ٹریلرز جمع کیے ہیں تاکہ وہ بھی اندازہ لگا سکیں کہ پاکستانی سینما کس حد تک آگے بڑھ چکا ہے۔

کپتان

قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان عمران خان کے کرکٹر سے سیاست دان بننے کے سفر پر بھی ایک فلم طویل عرصے سے زیر التواء ہے جس کے بارے میں کہا جارہا ہے کہ اسے 2015 میں ریلیز کیا جاسکتا ہے۔ اس فلم کا نام ” کپتان” ہے جس میں عمران خان کی زندگی اور کرکٹ کے بعد سیاستدان کی حیثیت سے ان کے کریئر پر روشنی ڈالی گئی ہے۔ 1992 کے ورلڈ کپ کے بشمول قومی ٹیم کو میدان پر کئی کامیابیوں سے ہمکنار کرنے کے بعد عمران خان صف اول کے سیاستدان بن چکے ہیں اس فلم میں عمران خان کی زندگی کے تجربات کو اجاگر کیا جائے گا۔ برطانیہ میں مقیم فلم ساز فیصل امان خان اس فلم کے ڈائریکٹر ہے۔

ماہِ میر

فہد مصطفیٰ کی ایک اور فلم جس کا لوگوں کو کافی انتظار ہے وہ ‘ماہ میر’ ہے، جو کہ معروف شاعر میر تقی میر کے کلام پر مبنی ہے، اس فلم میں کافی بڑے نام جیسے فہد مصطیٰ، ایمان علی، اعلیٰ خان، صنم سعید اور منظر صہبائی لوگوں کو اپنی جانب کھیچنے کے لیے موجود ہیں۔ اس فلم کو انجم شہزاد اور سرمد صہبائی نے ڈائریکٹ کیا ہے جبکہ اس کے پروڈیوسر خرم رانا، ساحر رشید اور بدر اکرام ہیں۔ اس فلم کا ٹریلر دیکھ کر لگتا ہے کہ جیسے یہ کسی مسٹری پر بنائی گئی ہے۔

سایہ خدائے ذوالجلال

یہ فلم اس لیے بھی خاص ہے کہ اسے آئی ایس پی آر اور پاک فضائیہ کے تعاون سے بنایا جا رہا ہے، اس فلم کی ہدایات دی ہیں عمیر فضلی نے اور اس کے پروڈیوسرز جہان فلمز اور اے آر پروڈکشنز ہیں جبکہ اس کی کاسٹ میں شان شاہد، نور بخاری، ریشم، شفقت چیمہ، عمیر سلطان، نیئر اعجاز، ارباز خان اور ریمبو شامل ہیں۔ اس فلم میں پاکستانی تاریخ کے وہ باب دکھائے جائیں گے جو آج تک ٹی وی یا بڑی اسکرین پر نہیں دکھائیں گئے ہیں اور اس کا ٹریلر اس کا ثبوت ہے۔

ہجرت

فلم ‘ہجرت’ ایمان اور امید کے ایک سفر کی کہانی ہے، جسے تحریر اور ڈائریکٹ فاروق مینگل نے کیا ہے جبکہ اس کے پروڈیوسر ایف ایم پروڈکشن ہیں۔ اس فلم کی کہانی ان افراد کے گرد گھومتی ہے جو افغان جنگ سے متاثر ہوئے ہیں اور اس کی شوٹنگ پاکستان اور یورپ میں ہوئی ہے، اس کی کاسٹ میں اسد زمان، رابعہ بٹ، نعمان اعجاز، ندیم بیگ، سلمی آغا، ایوب کھوسو، زیب رحمان، جمال شاہ اور دردانہ بٹ شامل ہیں۔

مہلب

یہ ایک رومانوی فلم ہے جس میں دکھایا گیا ہے کہ بھوک اور سخت رسوم و رواج کے باوجود محبت کس طرح پروان چڑھتی ہے، اس فلم کے ڈائریکٹر اسد جبل ہیں جبکہ اسے تحریر کیا ہے ڈاکٹر خالد احمد نے۔ اس کی کاسٹ میں ایوب کھوسو، حنان سمید، صبور علی، دردانہ بلوچ، پاکیزہ خان اور آفتاب جبل شامل ہیں، اب تک اس فلم کا بہت ہی مختصر ٹریلر جاری ہوا ہے جو یہ رہا۔

کائٹس گراﺅنڈڈ

یہ فلم باقی سب سے بالکل مختلف ہے بلکہ دل کو چھو لینے والی ہے، اس فلم میں ایک بوڑھے شخص کی کہانی کو بیان کیا گیا ہے جو پتنگیں فروخت کر کے روزگار کماتا ہے، اس فلم میں دکھایا گیا ہے کہ پتنگ بازی پر حکومتی پابندی نے ایسے افراد کی زندگیوں کو کس حد تک متاثر کیا ہے۔ اس فلم کے ڈائریکٹر مرتضیٰ علی جبکہ پروڈیوسر سیما حمید ہیں، اس کی کاسٹ میں مرکزی کردار عرفان کھوسٹ نے نبھایا ہے جبکہ دیگر میں تسنیم کوثر، عابد کشمیری، طاہرہ بابر، زوہیب حیدر، ثناء سحر اور رضیہ ملک شامل ہیں۔

8969

عظیم سجاد کی ہدایات میں بننے والی اس فلم میں صبا قمر، حسین ٹیوانا، صدف حمید، عظیم سجاد اور انعم ملک سمیت دیگر اسٹارز کام کر رہے ہیں۔ سجاد کو انٹرٹینمنٹ صنعت میں دو دہائیوں سے زائد عرصہ ہوگیا ہے اور انہوں نے زیادہ تر پشتو ٹی وی ڈرامے ہی ڈائریکٹ کیے ہیں، خاص طور پر اے وی ٹی خیبر پر نشر ہونے والا زا پختون یم (میں پختوں ہوں) کافی مشہور ہوا۔ فلم 8969 ایک مرڈر ہے جس میں رومانوی پہلو بھی شامل ہے۔

مالک

90 کی دہائی میں پی ٹی وی کوئٹہ سینٹر سے ڈرامہ سیریل ‘دھواں’ کے ذریعے منفرد شہرت پانے والے اداکار عاشر عظیم نے بھی فلم انڈسٹری میں قدم رکھ دیا۔ وہ طویل عرصے تک بیرون ملک میں رہنے کے بعد ٹیلی فلم محافظ بنا کر ٹی وی انڈسٹری میں انٹری دے چکے ہیں۔ تاہم انہوں نے اپنی ذاتی فلم ‘مالک’ بنانے کا فیصلہ کیا ہے جس کی کہانی بھی انہوں نے خود لکھی ہے اور اس کی ہدایات بھی خود دیں گے۔ اس فلم میں وہ خود بھی اہم کردار میں جلوہ گر ہوں گے جبکہ ٹی وی اداکار فرحان علی آغا، حسن نیازی، سبیرین بلوچ بھی اس فلم سے اپنے فلمی کریئر کا آغاز کریں گے۔ یہ فلم 14 اگست 2015 کو نمائش کے لئے سینما گھروں کی زینت بنے گی۔

ملک

رواں سال سینما گھروں کی زینت بننے کے لیے ہمایوں سعید کی ایک اور فلم آنے والی ہے۔ حقیقی زندگی کے کردار بزنس ٹائیکون ملک ریاض کی زندگی پر مبنی اس فلم کا مرکزی کردار ہمایوں سعید ادا کر رہے ہیں۔ ‘نامعلوم افراد’ سے شہرت حاصل کرنے والی عروہ حسین ان کی بیوی کی شکل میں نظر آئیں گی جبکہ یوسف بشیر قریشی ملک کے ساتھی ہوں گے۔ ملک ریاض ہمیشہ سے اپنی حیرت انگیز ترقی کے باعث موضوع بحث بنے رہتے ہیں۔ ہمایوں سعید کی مضبوط ڈائیلاگ ڈیلیوری اس فلم کو کافی زبردست دکھاتی ہے اور ہم توقع کرسکتے ہیں کہ اس سے ہماری صنعت کا معیار اور بلند ہوگا۔

ڈانس کہانی

یہ ایک غیرمعمولی لولی وڈ فلم ہے جو کہ مکمل طور پر رقص یا ڈانس کے گرد گھومتی ہے بلکہ یہ کہنا غلط نہیں ہوگا کہ یہ پہلی پاکستانی ڈانس فلم ہے جس میں کچھ نوجوان اپنے خوابوں کی تعبیر کے لیے اپنی صلاحیت منوانے کی کوشش کررہے ہوتے ہیں۔ یہ فلم پہلے 2014 میں ریلیز کی جانی تھی مگر مختلف وجوہات کی بناء پر اب یہ 2015 میں سینماﺅں پر نظر آئے گی جس کی ڈائریکشن سید عمر دے رہے ہیں اور انہوں نے ہی اسے تحریر کیا ہے۔ اس فلم کی کاسٹ میں میڈیلین ہنا، علمدار خان اور ورنن یو چونگ شامل ہیں اور اس میں کراچی کی گلیوں میں چھپے رقص کے کلچر کو پیش کیا گیا ہے۔

3 بہادر

بنیادی طور پر بچوں کی دلچسپی کے موضوع پر بنائی گئی اس فلم کا بنیادی خیال آسکر ایوارڈ یافتہ شرمین عبید چنائے کا ہے جو موسم گرما میں ریلیز کی جائے گی۔ یہ پہلی بار ہے کہ پاکستانی بچے خود اپنی نمائندگی سینما میں ہوتے دیکھیں گے اور یہ سپرہیرو فلم ایک افسانوی قصبے روشن بستی کی ہے جس کا حال پاکستانی شہروں جیسا ہی ہوتا ہے۔

یہاں تک کہ فلم کے مرکزی کردار بچے آمنہ، سعدی اور کامل کی جڑیں بھی تصوراتی ہونے کی بجائے حقیقی ہیں۔ یہ غیرمتوقع ہیروز، دوستی اور ٹیم ورک کے ذریعے اکھٹے ہوکر ایک خطرناک دشمن کو شکست دیتے ہیں اور یہ کہانی دلچسپ اور دنیا سے جڑی ہوئی ہے مگر اس کو ایسے انداز میں پیش کیا گیا ہے کہ روایتی کردار، مقامات اور ماحول ایک عالمگیر کہانی کی شکل میں منفرد حیثیت اختیار کرگئے۔

گول چکر

گول چکر ایک کامیڈی فلم ہے جس کی ہدایات شہباز سگھڑی جبکہ پروڈیوسر و رائٹر عائشہ لینا اختر ہیں۔ یہ ایسے تفریح کے متلاشی نوجوانوں کا ایک گروپ ہوتا ہے جو خود کو اسلام آباد کا بادشاہ سمجھتے ہیں مگر اپنی سرگرمیوں کے دوران ایک چھوٹے پیمانے کے گینگسٹر کے ہاتھوں مشکلات کا سامنا ہوتا ہے اور اس دوران ان لڑکوں کو کافی مزاحیہ صورتحال کا سامنا بھی ہوتا ہے۔ اس کی کاسٹ میں علی رحمان خان، حسن برہان اختر، عثمان مختار، عذیر جسوال، سلمان احمد شوکت، اسد علی سگھڑی، عادل گل، صبور پاشا، شاہانہ خان خلیل اور وقاص شامل ہیں۔

کولاچی

یہ ایک سائنس فکشن فلم ہے جس کی کہانی پانچ کرداروں کے گرد گھومتی ہے جس کی ہدایات سمر نکس نامی آسٹریلین ڈائریکٹر دے رہے ہیں جبکہ اس کے پروڈیوسر مہر جعفری، جو تھامس اور گریک پیٹر جونز ہیں۔ اس میں پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی کے کچھ افراد کے مختلف حالات کو دکھایا گیا ہے جو مہذب دنیا کے خاتمے کے خطرات سے دوچار ہونے کے بعد مشکلات کا شکار ہوتے ہیں۔ اس فلم کی کاسٹ میں شہروز سبزواری، بہروز سبزواری، مہر جعفری، معیز بادشاہ، اکبر اسلم اور دیگر شامل ہیں۔

دی ڈسک

یہ ایک ایسے نوبیاہتا چوڑے کی کہانی ہوتی ہے جو اپنی شادی کے پانچویں روز پراسرار انداز سے اغواء ہوجاتے ہیں اور اغواء کرنے والے نہ تو تاوان کا مطالبہ کرتے ہیں اور نہ ہی ورثاء سے رابطہ کرتے ہیں۔ اس کے بعد اس جوڑے کی زندگی خوف اور پریشانی سے بھر جاتی ہے۔ یہ فلم وجاہت کاظمی کی تحریر کردہ ہے جس کے پروڈیوسر بھی وہ خود ہیں جبکہ ڈائریکٹر ذیشان کاظمی ہیں، اس کاسٹ میں اسماء خان، عبداللہ سلطان، عمران اختر، راشد محمود اور حسن مراد شامل ہیں۔

مور

مور ایک پشتو لفظ ہے جو ماں کے لیے استعمال کیا جاتا ہے، اس فلم کو تحریر اور ڈائریکٹ جمشید محمود رضا (جامی) نے کیا ہے اور اس کے پروڈیوسر مانڈی والا انٹرٹینمنٹ ہے۔ یہ فلم بلوچستان میں ریلوے سسٹم کے گرد گھومتی ہے خاص طور پر وادیٔ ژوب میں 1984 میں ریلوے کی بندش کو موضوع بنایا گیا ہے، جبکہ یہ بھی دکھایا گیا ہے کہ کس طرح اپنے خاندانوں کے لیے خواتین کس طرح قربانیاں دیتی ہیں۔ اس فلم کی کاسٹ میں حمید شیخ، سمیعہ ممتاز، شاز خان، عبدالقدیر، سونیا حسین، ایاز سومو، نیئر اعجاز اور دیگر شامل ہیں۔

آزاد

آزاد اگرچہ اسٹار کاسٹ یا بڑے بجٹ کی فلم نہیں تاہم اس کا ٹریلر بہت زبردست ہے، یہ پاکستان کی اپنی طرز کی پہلی فلم ہے جس میں ایک سیریل کلر کی ذہنیت کو بیان کرنے کی کوشش کی گئی ہے اور اس کہانی کی ٹیگ لائن ہی یہ ہے کہ ہر شخص سیریل کلر پیدا نہیں ہوتا۔ اس فلم کو تحریر، ڈائریکٹ اور پروڈیوس کیا ہے حسام خان نے جبکہ اس کی کاسٹ میں حسام خان، حماد صدیق،ارسل حسن، روز محمد، ثمین خان اور نتاشا بیگ شامل ہیں۔

پرائس آف آنر

اس فلم کو تحریر اور پروڈیوس کیا ہے افضل ایم خان اور سید نور اس کے ڈائریکٹر ہیں، اس فلم میں ہمارے معاشرے خاص طور پر دیہات میں نچلے طبقے میں خواتین کی حالت و زار کو بیان کیا گیا ہے، بنیادی طور پر یہ روایتی لولی وڈ فلم ہی لگتی ہے۔

کمبخت

‘کمبخت’ دلچسپ کاسٹ کی فلم ہے جس میں ناظرین اپنے پسندیدہ ٹی وی ستاروں کو پہلی بار بڑی اسکرین پر دیکھ سکیں گے، اس کی کاسٹ میں ہمایوں سعید، شفقت چیمہ، شہریار منور صدیقی، سوہا علی ابڑو، فضا زہرہ، حمزہ علی عباسی، صبا قمر اور یوسف بشیر قریشی شامل ہیں۔ حمزہ علی عباسی، محمد عاطف صدیقی اور جواد رانا نے اسے تحریر کیا ہے جبکہ اس کی ہدایات بھی حمزہ علی عباسی نے دی ہیں، اس کے پروڈیوسرز میں عباد ابراہیم، شرمین خان، سعد انور عباسی، اے آر وائی فلمز اور کہانی فلمز شامل ہیں۔ یہ فلم حمزہ علی عباسی کے ذہن کی تخلیق ہے جنھوں نے اسکرین پلے بھی خود لکھا ہے جبکہ شہریار منور صدیقی نے کمبخت شخص کا کردار ادا کیا ہے۔

سوا رنگی

یہ فلم آسٹریلیا اور پاکستان کی کو پروڈکشن کے تحت بن رہی ہے، جس کے پروڈیوسرز مظہر عباس اور سمر نکس ہیں جبکہ اس کی ڈائریکشن فدا حسین دے رہے ہیں۔ اس فلم میں ریشم، ایوب کھوسو، نوید اکبر، وسیم منظور، ذوالفقار گل شاہی، آفتاب نثار، حمزہ مشتاق اور شاہ زیب جوہر اہم کردار نبھا رہے ہیں۔

عبداللہ

فلم ‘عبداللہ’ کی شوٹنگ بلوچستان میں ہو رہی ہے، اس کی ڈائریکشن ہاشم ندیم خان دے رہے ہیں جنھوں نے اسے تحریر بھی کیا ہے، اس فلم کی کہانی ہاشم ندیم خان کے مشہور ناول عبداللہ پر مبنی ہے۔ اس کی کاسٹ میں عمران عباس اور سعدیہ خان شامل ہیں، پہلے یہ اطلاعات تھیں کہ اس فلم کو 2013 میں ریلیز کیا جائے گا تاہم یہ ابھی تک سینما اسکرینوں تک پہنچ نہیں سکی ہے۔

جلیبی

اس فلم کے پروڈیوسرز میں اے آر وائی فلمز اور ری ڈرم فلمز شامل ہیں جبکہ اس کی کاسٹ عدنان جعفر، علی سفینہ، دانش تیمور، عزیر جسوال، وقار علی خان اور ژالے سرحدی پر مشتمل ہے۔ اے آر وائی کے مطابق اس فلم کو ایچ ڈی کیمروں پر فلمایا جا رہا ہے، یہ کیمرے ہالی وڈ فلموں جیسے ‘سکائی فال، گریوٹی اور آئرن مین تھری’ جیسی فلموں کے لیے استعمال کیے گئے تھے۔ اس فلم کے ڈائریکٹر یاسر جسوال ہیں۔

ان سب کے علاوہ وار کا سیکوئل یلغار اور اپنی جان قربان کرکے اسکول کا تحفظ کرنے والے اعتزاز احسن کی زندگی پر بننے والی فلم دی سیلیوٹ بھی ریلیز کی جارہی ہے۔

Leave a Reply

Back to top button