HTV Pakistan
بنیادی صفحہ » شاعری

شاعری

اب کس کا جشن مناتے ہو، اس دیس کا جو تقسیم ہوا …… پروین شاکر

اب کس کا جشن مناتے ہو، اس دیس کا جو تقسیم ہوا اب کس کے گیت سناتے ہو، اس تن من کا جو دونیم ہوا اس خواب کا جو ریزہ ریزہ ان آنکھوں کی تقدیر ہوا اس نام کا جو ٹکڑا ٹکڑا گلیوں میں بے توقیر ہوا اس پرچم کا جس کی حرمت بازاروں میں نیلام ہوئی اس مٹی کا ...

مزید پڑھیں »

پروین شاکر

فیصل ظفر ’محبت کا فلسفہ میری شاعری کی بنیاد ہے اور اسی کے حوالے سے اس ازلی مثلث یعنی انسان خدا اور کائنات کو دیکھتی اور سمجھتی ہوں۔‘ یہ بات ایک انٹرویو کے دوران اپنی شاعری سے جوانوں سے لے کر بزرگوں تک کا دل جیت لینے والی شاعرہ پروین شاکر نے کہی تھی۔ اردو کے منفرد لہجے کی شاعرہ ...

مزید پڑھیں »

اشک اپنی آنکھوں سے خْود بھی ہم چھْپائیں گے

اشک اپنی آنکھوں سے خْود بھی ہم چھْپائیں گے تیرے چاہنے والے شور کیا مچائیں گے صْبح کی ہَوا تجھ کو وہ ملے تو کہہ دینا شام کی منڈیروں پر ہم دیئے جلائیں گے ہم نے کب ستاروں سے روشنی کی خواہش کی ہم تمہاری آنکھوں سے شب کو جگمگائیں گے تْجھ کو کیا خبر جاناں ہم اْداس لوگوں پر ...

مزید پڑھیں »

بس اتنا یاد ہے

دعا تو جانے کون سی تھی ذہن میں نہیں بس اتنا یاد ہے کہ دو ہتھیلیاں ملی ہوئی تھیں جن میں ایک مری تھی اور اک تمھاری !

مزید پڑھیں »

گمان

میں کچی نیند میں ہوں اور اپنے نیم خوابیدہ تنفس میں اترتی چاندنی کی چاپ سنتی ہوں گماں ہے آج بھی شاید میرے ماتھے پہ تیرے لب ستارے ثبت کرتے ہیں

مزید پڑھیں »

پیار

ابرِ بہار نے پھول کا چہرا اپنے بنفشی ہاتھ میں لے کر ایسے چوما پھول کے سارے دکھ خوشبو بن کر بہہ نکلے ہیں

مزید پڑھیں »

واہمہ

تمھارا کہنا ہے تم مجھے بے پناہ شدت سے چاہتے ہو تمھاری چاہت وصال کی آخری حدوں تک مرے فقط میرے نام ہوگی مجھے یقین ہے مجھے یقین ہے مگر قسم کھانے والے لڑکے تمھاری آنکھوں میں ایک تل ہے!

مزید پڑھیں »

پیش کش

اتنے اچھے موسم میں روٹھنا نہیں اچھا ہار جیت کی باتیں کل پہ ہم اٹھا رکھیں آج دوستی کر لیں !

مزید پڑھیں »

ہے ابھی لمس کا احساس مرے ہونٹوں پر

ہے ابھی لمس کا احساس مرے ہونٹوں پر ثبت پھیلی ہوئی باہوں پہ حرارت اس کی وہ اگر جا بھی چکی ہے تو نہ آنکھیں کھولو ابھی محسوس کئے جاؤ رفاقت اس کی وہ کہیں جان نہ لے ریت کا ٹیلہ ہوں میں میرے کاندھوں پہ ہے تعمیر عمارت اس کی بے طلب جینا بھی شہزاد طلب ہے اس کی ...

مزید پڑھیں »

چپ کے عالم میں وہ تصویر سی صورت اس کی

چپ کے عالم میں وہ تصویر سی صورت اس کی بولتی ہے تو بدل جاتی ہے رنگت اس کی آنکھ رکھتے ہو تو اس آنکھ کی تحریر پڑھو منہ سے اقرار نہ کرنا تو ہے عادت اس کی

مزید پڑھیں »

جو شہر سوکھ گیا ہے وہ ہرا کیسے ہو

جو شہر سوکھ گیا ہے وہ ہرا کیسے ہو میں پیمبر تو نہیں میرا کہا کیسے ہو دل کے ہر ذرے پہ ہے نقش محبت اس کی نور آنکھوں کا ہے آنکھوں سے جدا کیسے ہو جس کو جانا ہی نہیں اس کو خدا کیوں مانیں اور جسے جان چکے ہیں وہ خدا کیسے ہو عمر ساری تو اندھیرے میں ...

مزید پڑھیں »

شکوہ

کيوں زياں کار بنوں ، سود فراموش رہوں فکر فردا نہ کروں محو غم دوش رہوں نالے بلبل کے سنوں اور ہمہ تن گوش رہوں ہم نوا ميں بھي کوئي گل ہوں کہ خاموش رہوں جرات آموز مري تاب سخن ہے مجھ کو شکوہ اللہ سے ، خاکم بدہن ، ہے مجھ کو ہے بجا شيوہء تسليم ميں مشہور ہيں ہم قصہ درد سناتے ہيں کہ مجبور ہيں ...

مزید پڑھیں »